جمعیۃ علماضلع مظفرنگر کے وفد کی ضلع مجسٹریٹ سے ملاقات،سعد پور قبرستان کی زمین کو قبضہ سے آزاد کرانے کا مطالبہ

مظفرنگر (پریس ریلیز):جمعیۃ علماضلع مظفرنگر کے ایک وفد نے ضلع مجسٹریٹ چندر بھوشن سنگھ اور اے ڈی ایم ای امت کمار سے ملاقات کرکے سعد پور گاؤں کے مقبوضہ قبرستان کا مسئلہ اٹھایا ،اور مطالبہ کیا کہ ۲۴ بیگہ کے قبرستان کو جاٹوں کے قبضہ سے آزاد کراکر مسلم سماج کے حوالہ کیا جائے ۔جمعیۃ علمااترپردیش کے سابق صوبائی نائب صدر مولانا جمال الدین قاسمی ، ومولانا محمد موسیٰ قاسمی سکریٹری جمعیۃ علمامظفرنگر کی قیادت میں ایک وفد نے ضلع کے اعلی ٰ افسران کو قبرستان کی ملکیت کے سبھی پرانے دستاویز اور وقف کی املاک کے کاغذات مہیاکراتے ہوئے کہا کہ سعد پور گاؤں کا خسرا نمبر 270جو کہ قبرستان کے نام درج ہے ،اور وقف بورڈاترپردیش کی املاک میں بھی درج ہے ۔ 1962کے بعد کے سبھی دستاویزوں میں یہ زمین قبرستان کے ہی نام پر درج چلی آرہی ہے، جہاں پر آج بھی بہت ساری قبریں بنی ہوئی ہیں،لیکن کچھ شہ زورں کے اشارہ اور ان کی کوششوں اور افسران کی ملی بھکت سے مذکورہ اراضی پر جاٹ سماج کے کچھ لوگوں نے ناجائز قبضہ جمارکھاہے ۔تمام ثبوت اور دستاویـزوں کے باوجود سی او چک بندی کے غلط فیصلہ کی بنیاد پر قبرستان کی آراضی پر ناجائز قبضہ کئے ہوئے ہیں،جمعیۃ کے وفد نے اعلیٰ افسران سے مطالبہ کیا کہ سعدپور سمیت تمام مقبوضہ قبرستانوں کی آراضی کو قبضوں سے آزاد کراکر ان کومحفوظ کیا جائے ۔وفد کی باتوں کو بغور سننے کے بعد ضلع مجسٹریٹ چندر بھوشن سنگھ اور اے ڈی ایم امت کمار نے وفد کو یقین دلایا کہ قبرستان کی زمین کی نوعیت نہیں بدلی جائے گی اور کسی کو بھی ناجائز قبضہ کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی، مولانا جمال الدین قاسمی ومولانا موسیٰ قاسمی نے کہا کہ قبرستان کی لڑائی آخر تک لڑی جائے گی ، کسی بھی صورت میں ز مین پر قبضہ نہیں ہونے دیا جائے گا۔