انٹرنیٹ کے پورے آپریٹنگ انفراسٹرکچر پر نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے:وزیر برائے انفارمیشن ٹکنالوجی

نئی دہلی:انفارمیشن ٹیکنالوجی کے وزیر اشونی وشنو نے جمعرات کوکہاہے کہ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز اور ویب سائٹس پر پوسٹ کیے گئے مواد کی ذمہ داری واضح طور پر بیان ہونی چاہیے۔وزیر نے مزیدکہاہے کہ پچھلی چند دہائیوں میں ٹیکنالوجی اور انٹرنیٹ میں ہونے والی تبدیلیوں نے انٹرنیٹ کے گورننس ڈھانچے میں بنیادی نظر ثانی کی ضرورت ہے۔وشنو نے پہلے انڈیا انٹرنیٹ گورننس فورم (IIGF 2021) کا افتتاح کرتے ہوئے کہاہے کہ مواد تخلیق کرنے کے طریقے، مواد استعمال کرنے کے طریقے، انٹرنیٹ استعمال کرنے کے طریقے، وہ زبانیں جن میں انٹرنیٹ استعمال ہوتا ہے، مشینیں انٹرنیٹ تک رسائی، سب کچھ بدل گیا ہے۔ لہٰذاان بنیادی تبدیلیوں کے ساتھ، ہمیں یقینی طور پر انٹرنیٹ کے پورے آپریٹنگ انفراسٹرکچر پر بنیادی طور پر نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے۔یہ بتاتے ہوئے کہ ہندوستان اس سلسلے میں ایک رہنماہے، وشنونے کہاہے کہ انٹرنیٹ کے سب سے بڑے استعمال کنندگان میں سے ایک ہندوستان ہوناچاہیے۔ایک ایسے دور میں جہاں موبائل آلات کے ذریعے مواد تیار اور استعمال کیا جا رہا ہے، وزیر نے فورم کے شرکاء سے کہاہے کہ وہ مواد کی ذمہ داری سمیت اہم مسائل پر بات چیت اور غور و خوض کریں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے، الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹکنالوجی کے وزیر مملکت راجیو چندر شیکھر نے اس بات پر زور دیا کہ عالمی انٹرنیٹ کے مستقبل کی قیادت ہندوستان کے انٹرنیٹ ایکو سسٹم اور اختراعی صلاحیتوں کے ذریعے کی جانی چاہیے۔چندر شیکھرنے کہاہے کہ اس تناظر میں، یہ انتہائی اہم ہے کہ ہم بحیثیت قوم انٹرنیٹ کے مستقبل کو احتیاط سے ترتیب دیں، پالیسیوں اور ضابطوں، حقوق اور ذمہ داریوں کو احتیاط سے ترتیب دیں۔