انڈین یونین مسلم لیگ نے احتجاجی کسانوں کو خوردنی اشیا فراہم کی

نئی دہلی:انڈین یونین مسلم لیگ دہلی پردیش کی جانب سے غازی پور دہلی یوپی بارڈر اورسندھوبارڈ پر جہاں کسان آندولن کررہے رہیںایک ایک ہزار کھانے کی پیکیٹ فراہم کی گئی۔اس کے علاوہ موبائل چارج کرنے کے لیے دو بڑے بڑے گروپ چارجر جس میں سینکڑوں موبائل بیک وقت چارج ہوسکے فراہم کی گئی ۔اس موقع پر مولانا نثار احمد نقشبندی نے کہا کہ کسان بھائی صرف اپنی لڑائی نہیں لڑرہے ہیں بلکہ وہ عوام کو مناسب اور سستے میں راشن فراہم کرنے کے لیے لڑرہے ہیں۔جبکہ سرکار امبانی اور آڈانی کو فائدہ پہنچانے کے لئے اور انہیں عوام کو لوٹنے کے لئے قانون سازی کررہی ہے۔وہ جانتے ہیں کہ انہیں دام تو کم ملے گا ہی لیکن عوام کا جینا محال ہوجائے گا۔عوام کو دو وقت روٹی نصیب نہیں ہوگی ۔عوام کو سرعام لوٹنے کی تیاری ہوچکی ہے ۔یہ بل پورے ملک میں نافذ ہوچکا ہے جس سے صرف کسانوں کا نقصان نہیں ہورہا ہے بلکہ عوام کا بھی نقصان ہورہا ہے ۔اس لیے عوام کو چاہئے کہ وہ کسانوں کی لڑائی اور تحریک کو اپنی لڑائی سمجھتے ہوئے حوصلہ بڑھائیں ۔
اس موقع پرخرم انیس عمر جنرل سکریٹری آل انڈیانے کہا کہ بی جے پی نے وعدہ کیاتھا کہ ملک کے کسانوں کی آمدنی دو گنی کی جائے گی اور کسان اپنی محنت کا پورا معاوضہ حاصل کریں گے۔ لیکن ساڑھے چھ سال ہو گئے کسانوں سے کیا گیا یہ وعدہ آج تک پورا نہیں کیا گیا۔ کسانوں کے اس احتجاج کو اور اس تحریک کو ناکام کرنے کے ساتھ ساتھ بدنام کرنے کی بھی کوشش کی جاتی ہے۔اس موقع پرخرم انیس عمر جنرل سکریٹری آل انڈیا ،شیخ فیصل حسن جنرل سکریٹری دہلی پردیش ،،محمدعارف،فیصل بابو ،سی کے زبیر یوتھ لیگ آل انڈیاجنرل سکریٹری ،معین الدین انصاری نائب صدر ،محمد نظام ،نورالشمس ،آصف انصاری ،مفتی فیروز الدین مظاہری سکریٹری ،عبدالحمید انصاری خزانچی ،محمد زاہد نائب خزانچی ،مدثر الحق ،شہزاداحمد یوتھ لیگ ،اتیب خان ایم ایس ایف کنوینر،شفیق احمد ،مصطفی منصوری،مولانا رحمت اللہ فاروقی،ارشاد احمد،مولانا دین محمد قاسمی،مولانا الطاف الرحمن،حافظ محمد اسلام وغیرہ شامل ہوئے۔