مغربی یوپی کے معروف کانگریسی لیڈرعمران مسعود ایس پی میں شامل

نئی دہلی:اتر پردیش اسمبلی انتخابات کی تیاریوں میں مصروف پرینکا گاندھی اور ان کی پارٹی کوانتخابات سے ایک ماہ قبل بڑا جھٹکا لگا ہے۔ اتر پردیش کانگریس کے رہنما عمران مسعود نے باضابطہ طور پر کانگریس کو چھوڑ کر سماج وادی پارٹی میں جانے کا اعلان کیا۔ عمران مسعود نے آج میٹنگ کی جس کے بعد انہوں نے یہ اعلان کیا۔عمران مسعود کافی عرصے سے ایس پی جانے کا عندیہ دے رہے تھے۔ وہ مانتے ہیں کہ اتر پردیش میں سیدھی لڑائی بی جے پی اور ایس پی کے درمیان ہے۔ عمران مسعود نے 2007 کے اسمبلی انتخابات میں آزاد حیثیت سے کامیابی حاصل کی تھی۔ انہوں نے 2012 میں کانگریس کے ٹکٹ پر اسمبلی الیکشن لڑا اور ہار گئے۔ 2013 میں مسعود ایس پی میں شامل ہوئے تھے۔ اگلے سال وہ کانگریس میں واپس آئے اور سہارنپور سے 2014 اور 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں حصہ لیا۔ مسعود دونوں الیکشن ہار گئے۔2014 میں مسعود کو انتخابی مہم کے دوران نفرت انگیز تقاریر کرنے کے الزام میں گرفتار کر کے جیل بھیج دیا گیاتھا۔عمران مسعود سہارنپور سے کانگریس کے پانچ بار لوک سبھا ممبر منتخب ہونے والے راشد مسعود کے بھتیجے ہیں۔ راشد مسعود کا انتقال 2020 میں ہوا۔