حکومت نے نافذ کیا جی پی ایس پر مبنی ٹول کلیکشن سسٹم ،دو سال میں ٹول بوتھ ہوں گے ختم

نئی دہلی:مرکزی وزیر روڈ ٹرانسپورٹ اینڈ ہائی ویز نتن گڈکری نے اعلان کیا ہے کہ حکومت ہند نے ہندوستان میں جی پی ایس پر مبنی ٹول ادائیگی کے لیے منظوری دے دی ہے۔ گڈکری نے کہا کہ حکومت کے اس اقدام سے ملک بھر میں گاڑیوں کی آمدورفت بہت آسان ہوجائے گی اور اگلے دو سالوں میں ہندوستان کو بغیر ٹول بوتھ والاملک بنانے میں مدد ملے گی۔ مرکزی وزیر نے مزید کہا کہ جی پی ایس پر مبنی سسٹم سے گاڑی کے فاصلے کے مطابق مقررہ رقم براہ راست گاڑی کے مالک کے کھاتے سے کاٹ لی جائے گی۔نتن گڈکری نے کہا کہ مارچ 2021 تک ٹول کلیکشن سسٹم34000 کروڑروپے تک پہنچ جائے گی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ جی پی ایس کے ذریعہ ٹول چارجز وصول کرنے پر یہ تعداد اگلے پانچ سالوں میں 134000 کروڑ روپے تک پہنچ جائے گی۔ گڈکری نے بتایا کہ جہاں تمام نئی کمرشیل گاڑیاں ٹریکنگ سسٹم کے ساتھ آرہی ہیں وہیں حکومت کو پرانی گاڑیوں میں جی پی ایس لگانے کے لیے کچھ انتظام کرنا ہوگا۔فی الحال وزارت روڈ ٹرانسپورٹ اینڈ ہائی ویز 1 جنوری 2021 تک تمام چار پہیہ گاڑیوں کے لازمی فاسٹیگ کے استعمال پر کام کر رہی ہے۔ اس کا بنیادی مقصد ٹول چارجز کو ڈیجیٹل طور پر جمع کرنا ہے اور اسے پرانی گاڑیوں کے لیے  بھی لازمی کردیا جائے گا جو یکم دسمبر 2017 سے پہلے فروخت ہوچکی ہیں۔