حکومت مخالف اکاؤنٹس کواَن بلاک کیوں کیا؟،مودی سرکار کی ٹویٹر کووارننگ

نئی دہلی:ٹویٹرپرمبینہ متنازعہ ہیش ٹیگ پرمشتمل ٹویٹس کو مودی سرکار کی جانب سے سخت انتباہ دیاگیا ہے۔ حکومت نے ٹویٹر کو ہدایت کی ہے کہ وہ کسانوں پرمتنازعہ ہیش ٹیگ سے متعلقہ مواد / کھاتوں کے خاتمے سے متعلق ہدایات پر عمل کرے۔ حکومت کی جانب سے کہا گیا تھا کہ حکم کی تعمیل نہ ہونے کی صورت میں مائیکروبلاگنگ سائٹ کے خلاف پینل ایکشن لیاجاسکتا ہے۔ کچھ اکاؤنٹس بلاک کرنے کے احکامات کے باوجود ٹویٹر نے اپنی طرف سے ان اکاؤنٹس کے استعمال پر عائد پابندی کو ختم کردیا۔سرکاری ذرائع نے بتایاہے کہ ٹویٹر نے کچھ اکاؤنٹس بلاک کرنے کے احکامات کے باوجود اپنی طرف سے ان اکاؤنٹس کے استعمال پرعائد پابندی کو ختم کردیا۔ ذرائع نے بتایاہے کہ ٹویٹر حکومت کی ہدایتوں پرعمل کرنے کاپابندہے۔ انہوں نے کہاہے کہ اگرسرکاری احکامات پر عمل نہیں ہوتا ہے تو ٹویٹر کو پینل ایکشن کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ حکومت نے کہاہے کہ سوشل میڈیا کانظریہ عدالت کی جگہ نہیں لے سکتا اور قواعد پر عمل نہ کرنے کا جواز پیش نہیں کرسکتا ہے۔ پیر (یکم فروری) کو ٹویٹر نے حکومت ہند کے الیکٹرانک اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وزارت کے حکم پر 250 اکاؤنٹس معطل کردیے تھے۔ ان اکاؤنٹس پر فرضی اوراشتعال انگیز ٹویٹس اور ہیش ٹیگ چلانے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔ آئی ٹی وزارت نے ان ٹویٹر اکاؤنٹس کو آئی ٹی ایکٹ کے سیکشن 69 اے کے تحت بلاک کرنے کو کہا تھا۔ اس کے بعد ٹویٹر نے ان اکاؤنٹس کو دوبارہ ان بلاک کردیا۔