ہم نے کبھی ججوں کے لیے فائیواسٹارہوٹل میں 100بیڈزنہیں مانگے:دہلی ہائی کورٹ

نئی دہلی:دہلی ہائی کورٹ نے ہائی کورٹ کے ججوں کے لیے اشوکا ہوٹل کے کمروں کے معاملے کا از خود نوٹس لیا ہے۔ دہلی ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ ججزکے لیے فائیو اسٹار ہوٹل میں کبھی بھی 100 بستروں کی سہولیات نہیں مانگی گئیں۔ ہائی کورٹ نے کہاہے کہ ہم نے پریس میں خبریں پڑھی ہیں۔ ہم نے کوئی درخواست نہیں کی۔ ہائی کورٹ نے کہاہے کہ آپ تصور کرسکتے ہیں کہ ہم یہ کیسے کہہ سکتے ہیں۔ لوگوں کو اسپتال نہیں مل رہے ہیں اور ہم آپ سے لگژری ہوٹل میں بسترمانگ رہے ہیں۔ میڈیا غلط نہیں ہے،آپ کا آرڈر غلط ہے۔ آپ کسی ایک کے لیے سہولت کیسے فراہم کرسکتے ہیں؟ دہلی حکومت کو جواب داخل کرناچاہیے۔ہائی کورٹ نے دہلی حکومت کو نوٹس جاری کیا ہے۔ حکومت نے کہا ہے کہ اس کے پیچھے کوئی بدنیتی نہیں تھی۔ہائی کورٹ نے کہاہے کہ اچھا رہے گا کہ آپ فوری طورپران احکامات کو واپس لیں۔ حکومت نے کہاہے کہ ہم فوری طورپردستبردارہوجائیں گے۔ ہائی کورٹ نے کہاہے کہ یہ سوچنے سے بالاتر ہے کہ ہم بطور ادارہ سہولت طلب کریں گے۔ جمعرات کواس معاملے کی سماعت ہوگی۔