حمد رب العالمین ـ احمد سجاد ساجد قاسمی

اے خداے لم یزل اے لا یزال
جملہ مخلوقات کا داناے حال
تو قدیر و قادر مطلق ہے تو
خالق ارض و سما بر حق ہےتو
یہ جہاں افسانہ، تو موجود ہے
خلق کا تو منزل مقصود ہے
ماہ و خورشید و نجوم و کہکشاں
سب ترے احکام پر گردش کناں
آب و خاک و باد و آتش اے حکیم
تیری حکمت کے ہیں الطاف عمیم
دانش و علم و ہنر، فکر و خیال
تیرے انعامات کی عمدہ مثال
دولت ایمان و انوار عمل
تیرے احسانات ہیں اے عز و جل
عشق رب، اخلاص یا باطن کا نور
تیرے فیض خاص سے سب کا ظہور
کر مجھے اپنی عطا سے سر فراز
بندۂ عاصی کو کردے پاک باز
میرے دل میں حرص دنیاے دنی
کردے میرے دل کو یا رب تو غنی
دل مرا بغض و حسد سے ہے بھرا
میں سراپا نخوت و کبر و ریا
پاک کر یا رب مجھے ہر عیب سے
کردے سامان شفا تو غیب سے
میرے روزے یا نمازیں نا تمام
ہر تلاوت ہر عبادت خام خام
مجھ کو طاعت کا شعور و ذوق دے
دل میں حب مصطفے کا شوق دے
بخش دے یا رب مرے جرم و خطا
ہے ترا ساجد الہی بے نوا

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*