ہم تاجروں کو بااختیار بنانے کے لیے پرعزم ہیں: وزیر اعظم مودی

نئی دہلی:وزیر اعظم نریندر مودی نے ہفتہ کے روز خوردہ اور تھوک فروشی کو مائیکرو ، چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں (ایم ایس ایم ای)کے زمرے کے تحت لانے کے فیصلے کو تاریخی قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ ان کی حکومت کمیونٹی کو بااختیار بنائے گی۔پرچون اور ہول سیل کاروبار کو ایم ایس ایم ای کے تحت لانے کے فیصلے کی وجہ سے خوردہ اور تھوک فروش بھی بینکوں اور مالیاتی اداروں سے ترجیحی طورپر قرض حاصل کرسکیں گے۔مرکزی ایم ایس ایم ای وزیر نتن گڈکری نے جمعہ کے روز خوردہ اور تھوک کی تجارت کو ایم ایس ایم ای کے تحت لانے کا اعلان کیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی یہ شعبے ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) کے رہنما خطوط کے مطابق بینکوں کی ترجیحی قسم کے تحت قرضے حاصل کرسکیں گے۔مودی نے ٹویٹ کیا ہے کہ ہماری حکومت نے ایم ایس ایم ای میں خوردہ اور تھوک کی تجارت کو شامل کرنے کے لیے ایک تاریخی قدم اٹھایا ہے۔ اس سے ہمارے کروڑوں تاجروں کو آسانی سے قرض حاصل کرنے میں مددملے گی۔ انہیں اور بھی بہت سے فوائد حاصل ہوں گے اور ان کے کاروبار کو بھی فروغ ملے گا۔ ہم اپنے تاجروں کو بااختیار بنانے کے لیے پرعزم ہیں۔سرکاری ذرائع نے بتایاہے کہ حکومت کے اس فیصلے سے چھوٹے خوردہ فروشوں اور تھوک فروشوں پر فوری طور پر اثر پڑے گا جس میں 250 کروڑ روپے کا کاروبار ہوگا اور وہ خودکفیل بھارت پروگرام کے تحت اعلان کردہ متعدد اسکیموں کے تحت فوری قرضے حاصل کرسکیں گے۔خوردہ اور تجارتی انجمنوں نے بھی اس اقدام کا خیرمقدم کیا ہے اور کہا ہے کہ اس سے بری طرح متاثرہ تاجروں کو اپنی ضرورت کا سرمایہ حاصل کرنے میں مددملے گی۔