ہم افغانستان کے حالات پر نگاہ رکھیں گے:ترک وزیر دفاع

انقرہ:ترکی کے وزیر دفاع حلوصی آقار نے کہا ہے کہ ترک فوجی، افغانستان میں فرائض کی ادائیگی کے بعد وطن واپس لوٹے ہیں اور بحیثیت ترکی ہم آئندہ بھی علاقے کے حالات پر نگاہ رکھیں گے۔ آقار نے، افغانستان سے واپس لوٹنے والے ترکی مسلح افواج کے اہلکاروں کے اعزاز میں قیصری ائیر بیس پر منعقدہ، تقریب سے خطاب کیا۔خطاب میں انہوں نے کہا ہے کہ ترک فوجیوں نے محارب ڈیوٹی کے علاوہ افغان شہریوں کو تعلیم کے شعبے میں تعاون فراہم کیا۔ 2002 سے آخر تک افغانستان میں کْل 20 ہزار ترک فوجیوں اور سِول ترکوں نے فرائض ادا کیے۔انہوں نے کہا ہے کہ طالبان کے کابل پر قبضے اور نیٹو کے ملک سے انخلاکا فیصلہ کرنے کے بعدتوقع زیادہ تیزی سے تبدیل ہوتی شرائط نے ترکی کو اپنے مشن پر نظر ثانی کرنے پر مجبور کر دیا۔ہم نے سرعت کے ساتھ موئثر فیصلے کر کے ترک فوجیوں اور ترک شہریوں کو 48 گھنٹوں کے قلیل عرصے میں افغانستان سے نکالا ہے۔وزیر دفاع حلوصی آقار نے کہا ہے کہ کابل ائیر پورٹ پر بھاری آمدو رفت اور شدید تناو کے باوجود کامیاب انخلاء ترک فوجیوں کی طاقت کا عکاس ہے۔ ترک فوجی افغانستان میں اپنے ابا و اجداد کے شایان شان شکل میں فرائض ادا کر کے وطن واپس لوٹ آئے ہیں۔ ہم بحیثیت ترکی اب کے بعد بھی علاقہ کے حالات پر نگاہ رکھیں گے۔حلوصی آقار نے انخلا کے عمل میں تعاون پر نیٹو اتحادیوں ، پاکستان اور تاجکستان کا بھی شکریہ ادا کیا۔