حافظ سعیدکے گرد گھیرا تنگ:پاکستانی عدالت سے دہشت گردی کے دو واقعات میں 10 سال قید کی سزا

لاہور:اطلاع کے مطابق نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 26/11 ممبئی حملوں کے ماسٹر مائنڈ حافظ سعید کو پاکستانی عدالت نے دہشت گردی کے دو مقدمات میں 10 سال قید کی سزا سنائی ہے۔ یہ پہلا موقع نہیں جب دہشت گرد گروہ لشکر طیبہ اور جماعت الدعوۃکے سربراہ حافظ سعید کو پاکستانی عدالت نے دہشت گردی کے ایک مقدمے میں سزا سنائی ہے۔ فروری میں حافظ سعید اور اس کے دیگر ہم کاروں کوبھی دہشت گردی سے متعلق مالی اعانت کیس میں 11 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔حافظ سعید نے ممبئی میں 2008 میں ہونے والے حملے کی منصوبہ بندی کی تھی ، جب 10 دہشت گردوں کے ذریعہ 166 افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہوے تھے۔ حافظ سعید جسے اقوام متحدہ اور امریکہ کے ذریعہ ’عالمی دہشت گرد‘ بھی کہا جاتا ہے ، کے سر پر 10 ملین ڈالر کا انعام ہے ۔ حافظ سعید کو گزشتہ سال جولائی میں بین الاقوامی دباؤ سے دہشت گردی کی مالی اعانت کے معاملے میں پاکستان میں گرفتار کیا گیا تھا۔ پاکستان اپنی شبیہ صاف کرنے کے لیے یہ کام کر رہا ہے۔سعید کو لاہور کی اعلیٰ سکیورٹی کوٹ لکھپت جیل میں رکھا جارہا ہے۔ عالمی دہشت گردی کی مالی معاونت کے معاملات پر نظر رکھنے والی فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے دباؤ میں پاکستان نے آزادانہ طور پر گھومنے والے دہشت گردوں کے خلاف یہ اقدام اٹھایا ہے۔ پاکستان کے محکمہ انسداد دہشت گردی نے جماعت الدعو ۃ کے رہنماؤں کیخلاف 41 مقدمات درج کیے ہیں اور حافظ سعید کیخلاف چار مقدمات کا فیصلہ کیا گیا ہے، باقی کیس متعدد عدالتوں میں زیر سماعت ہیں۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*