گورنرآئین کی خلاف ورزی میں مصروف،ٹی ایم سی کاالزام،ہٹانے کامطالبہ

کولکاتہ:مغربی بنگال میں اگلے سال ہونے والے اسمبلی انتخابات سے پہلے ہی ہلچل تیزہوگئی ہے ۔ترنمول کانگریس نے اب ریاستی گورنر جگدیپ دھنکڑکوعہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے۔ یہ الزام لگایا گیا ہے کہ گورنرمستقل آئین کی خلاف ورزی کررہے ہیں۔ترنمول کانگریس کے رکن پارلیمنٹ کلیان بینرجی نے کہاہے کہ پولیس کو گورنرکی طرف سے دھمکیاں دی جارہی ہیں اور ضوابط کی خلاف ورزی کی جارہی ہے۔ گورنر سارا دن ٹویٹ کرتے رہے رہتے ہیں، گورنرکی حیثیت سے کام نہیں کررہے ہیں۔ٹی ایم سی کے رکن پارلیمنٹ نے کہاہے کہ ہم کولکاتہ پولیس سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ گورنرکے خلاف قانونی کارروائی شروع کریں۔ صدر رام ناتھ کووند سے مداخلت کرنے کی بھی اپیل ہے کہ انہیں عہدے سے ہٹا دیاجائے۔گورنر جگدیپ دھنکڑ پر ممتا حکومت کے ذریعہ کئی بار ٹویٹر پر سوالات اٹھائے گئے ہیں۔ گورنر نے کورونا بحران میں ریاست کے امن و امان کی صورتحال پر سوال اٹھائے اور نشانہ بنایا ہے۔ گورنر نے متعدد بار پولیس افسران کو بھی طلب کیاہے،یہی وجہ ہے کہ ممتا حکومت اور گورنر ہاؤس میں کھینچاتانی کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔حال ہی میں گورنر نئی دہلی آئے اورانہوں نے مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ سے ملاقات کی اور ریاست کے امن وامان کے بارے میں تبادلہ خیال کیا۔ ٹی ایم سی مسلسل الزام لگا رہی ہے کہ گورنر بھارتیہ جنتا پارٹی کے ترجمان کی حیثیت سے کام کررہے ہیں ، ایسی صورت میں انہیں کرسی پر رہنے کا حق نہیں ہے۔