غلام نبی آزاد نے بھی توڑی چپی،بولے:جب تک فائیواسٹارکلچرختم نہیں ہوتا،الیکشن نہیں جیتا جاسکتا

نئی دہلی:کانگریس کے سینئرلیڈرغلام نبی آزادنے بھی بہاراسمبلی انتخابات اورضمنی انتخابات میں کانگریس کی شکست پر اپنی چپی توڑدی ہے۔غلام نبی آزادنے کہا کہ وہ پارٹی قیادت کو انتخابات میں شکست کا ذمہ دار نہیں ٹھہراتے ، لیکن ہم نچلی سطح پر عوام سے رابطہ کھو چکے ہیں۔جب تک ہم ہر سطح پر کانگریس کے ورکنگ اسٹائل کوتبدیل نہیں کریں گے ، معاملات نہیں بدلیں گے۔قیادت پارٹی کارکنوں کو ایک پروگرام دے اور عہدوں کے لیے انتخابات کرائے۔ اس سے قبل پی چدمبرم اور کپل سبل بہار کے انتخابات میں شکست کے بارے میں کھل کرسامنے آچکے ہیں۔ غلام نبی آزادنے کہاہے کہ وہ گاندھی خاندان کوموردالزام نہیں ٹھہرا سکتے ، کیونکہ اس وقت کورونا وبا کی وجہ سے ، زیادہ کچھ نہیں کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے ہمارے بیشترمطالبات کو قبول کیا ہے۔ اگر وہ قومی سطح پر متبادل بننے کے ساتھ پارٹی کو بحال کرنا چاہتے ہیں توکانگریس کی قیادت کوانتخابات کرانے چاہئیں۔ہم سب کو پارٹی سے پیار کرناچاہیے اوراسے ایک بارپھرمضبوط بنانے کی کوشش کرنی چاہیے۔ غلام نبی آزاد ، جو جموں وکشمیر کے رہنے والے ہیں ، نے کہاہے کہ پارٹی کو فائیو اسٹار کلچر پسند نہیں ہے ، آج جب کسی لیڈرکوٹکٹ ملتا ہے ، تو وہ پہلے فائیواسٹار ہوٹل بک کرتا ہے۔ اگر سڑک خراب ہے تو وہ وہاں نہیں جاتا ہے۔ جب تک فائیواسٹارکلچرترک نہیں ہوتا، الیکشن نہیں جیتا جاسکتا۔ کانگریس کے سینئر لیڈرنے کہاہے کہ جب تک ذمے داروں کاتقرر نہیں ہوتا،وہ اپنی ذمہ داریوں کو نہیں سمجھیں گے۔ لیکن اگر کانگریس کے تمام عہدیدار منتخب ہوتے ہیں تووہ اپنی ذمہ داری محسوس کریں گے۔ آج پارٹی میں کوئی بھی شخص کسی بھی پوزیشن کوحاصل کرسکتا ہے۔