غداری معاملے میں ظفر الاسلام خان کوہائی کورٹ سے پیشگی ضمانت

نئی دہلی:دہلی ہائی کورٹ نے جمعہ کے روز دہلی اقلیتی کمیشن (ڈی ایم سی) کے سابق سربراہ ظفر الاسلام خان کو غداری کے ایک معاملے میں پیشگی ضمانت دے دی۔ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ سماعت کے دوران جج منوج کمار اوہری نے 72 سالہ خان کو ضمانت دے دی جب پولیس نے کہا کہ آگے کی تفتیش کے لیے ان کی ضرورت نہیں ہے۔ ڈی ایم سی میں خان کی میعاد حال ہی میں ختم ہوئی ہے۔ عدالت ایڈووکیٹ ورنڈا گروور کے توسط سے دائر خان کی درخواست پر سماعت کر رہی تھی، جس میںاس کی عمر، صحت کے خطرات اور کورونا کے خطرے کا حوالہ دیتے ہوئے غداری کے معاملے میں ضمانت کی درخواست کی تھی۔ واضح رہے کہ 28 اپریل کو خان نے اپنے آفیشل پیج سے سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ شائع کی تھی جس کو لے کر نفرت آمیز تبصرہ کرنے کا الزام لگایا گیا تھا ۔ 2 مئی کو ایک شکایت کی بنیاد پر دہلی پولیس کے خصوصی سیل نے خان کے خلاف بغاوت کرنے اور نفرت پھیلانے کے الزام میں ہندوستانی تعزیرات ہند کی دفعہ 124 اے اور 153 اے کے تحت ایف آئی آر درج کی تھی ۔