فلیئر کلاسز میں درجہ دہم کے بچوں کو الوداعیہ

پٹنہ:فلیئر کلاسز(Flair Classes)عالم گنج میں درجہ دہم کے بچوں کو الوداعیہ دیا گیا۔ اس موقع پر فلیئر کے جوائنٹ ڈائرکٹر شایان غنی نے کہا کہ موجودہ سیشن طلبہ کے لیے چیلنجوں سے بھرا تھا۔ سیشن کے آغاز میں ہی کورونا وبا اور لاک ڈائون نے بچوں کی تعلیم کو بری طرح متاثر کیا۔ آن لائن کلاسز کے ذریعہ تعلیمی خسارے کو کم کرنے کی کوشش کی گئی۔ شایان غنی نے بتایا کہ فلیئر میں بھی اپریل کے مہینے سے آن لائن کلاسز شروع ہو گئے تھے جس کی وجہ سے وقت پر نصاب پورا کرنے میں کوئی پریشانی نہیں ہوئی۔ انھوں نے کہا کہ دسویں کے بعد طلبہ کو ایک بڑی جست لگانی ہوتی ہے۔ اس کے لئے انہیں ذہنی طور پر تیار رہنا چاہ اور بورڈ کے امتحان کے فوراً بعد ہی یکسوئی کے ساتھ اپنے تعلیمی سلسلے کو شروع کر دینا چاہئے۔ اس سے قبل فلیئر کے جوائنٹ ڈائرکٹر سلمان غنی نے اپنی افتتاحی گفتگو میں درجہ نہم کے طلبہ و طالبات کو کامیاب تقریب کے انعقاد پر مبارکباد پیش کی۔ انھوں نے کہا کہ اس طرح کے پروگرام کی تیاریوں سے طلبہ کی پوشیدہ صلاحیتیں سامنے آتی ہیں۔ سلمان غنی نے بتایا کہ نئے تعلیمی سیشن کے لیے فلئیر کوچنگ میں 5اپریل سے کلاسز شروع ہو جائیں گی۔ پروگرام کا آغاز ارسلان پرویز کی تلاوت سے ہوا ۔ جس کے بعد عبید الرحمن نے نعت پیش کی۔ اس موقع پر اپنی الوداعی تقریر میں درجہ دہم کے طالب علم التمش ملک نے کہا کہ انہیں اس کوچنگ میں بہت کچھ سیکھنے کا موقع ملا۔ یہاں کے ٹیچر ز نے ریاضی اور سائنس کو بالکل آسان زبان میں سمجھایا ۔ اس سے قبل انہیں ریاضی کے سوالات سے الجھن ہوتی تھی لیکن یہاں آنے کے بعد انہیں ریاضی کے سوال حل کرنے میں مزہ آنے لگا۔ اس موقع سے درجہ دہم کی طالبہ صابیہ الماس نے اپنی لکھی ہوئی ایک نظم کے ذریعہ کوچنگ میں گزرے ہوئے لمحات یاد کئے ۔ پروگرام کی نظامت درجہ نہم کے عرش اختر نے کی۔