فلم اداکار راج پال یادو حکومت اور کسانوں کے درمیان ثالثی کےلیے تیار،بیرونی مداخلت کی مذمت

پریاگ راج: فلم اداکار راج پال یادو نے کسانوں اور حکومت کے مابین جاری تصادم کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے دونوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اس معاملے میں ضد چھوڑ کر جلد بات کریں اور کوئی حل تلاش کریں۔ ان کا کہنا ہے کہ صرف چندہ دینے والے ہی ملک کو نہیں چلاتے ، عوام نے بھی حکومت کا انتخاب کیا ہے۔ اس معاملے میں وہ کسی کی حمایت یا مخالفت کرنے کے بجائے ان دونوں سے اپیل کررہے ہیں کہ وہ لچکدار رویہ کے ساتھ بات کریں۔ انہوں نے کہا کہ اگر کسانوں کا تعلق ملک سے ہے تو حکومت بھی ملک کی عوام کی ہی ہے، ایسی صورتحال میں کہ کسی کو بھی غلط یا صحیح نہیں ٹھہرایا جاسکتا ہے۔
راج پال یادو نے کہا کہ اگر حکومت اور کسان چاہتے ہیں تو وہ دونوں کے مابین بات چیت کے لیے اپنے آپ کو ثالث کے طورپرپیش کرنے پر راضی ہیں، لیکن ان کی اپیل یہ ہوگی کہ کسی بھی فریق کا ضد پر قائم رہنا مناسب نہیں، ملک کی خاطر فیصلہ کرنا پڑے گا۔ انہوں نے غیر ملکی فنکاروں کی طرف سے کسانوں کی تحریک کی حمایت کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ انہوں نے ہندوستان کے خلاف آواز اٹھائی ہے اور کہا کہ ہمارے ملک کے کسان اور حکومت دونوں ہی سمجھدار ہیں۔ دونوں اچھی طرح جانتے ہیں کہ کیا کرنا ہے اور کیا نہیں کرنا ہے۔ ملک کے معاملے میں بیرونی لوگوں کو مداخلت کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ ہندوستان کے داخلی معاملے میں بھی ایسی مداخلت کی ضرورت نہیں ہے۔