فی الحال ریلوے اراضی پر واقع 48 ہزار کچی آبادیوں کو نہیں ہٹایا جائے گا:حکومت

نئی دہلی:ہندوستانی ریلوے کی اراضی پر واقع 48 ہزار کچی آبادیوں کو نہیں ہٹایا جائے گا۔ مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ میں یہ کہا ہے۔ مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ میں کہاہے کہ فی الحال دہلی میں ریلوے لائنوں کے ساتھ واقع 48000 کچی آبادیوں کو نہیں ہٹایا جائے گا۔سالیسیٹر جنرل تشار مہتانے عدالت کوبتایا کہ ریلوے ، شہری ترقیات کی وزارت اور حکومت مل بیٹھ کر 4 ہفتوں میں اس کا حل تلاش کریں گی اوراس وقت تک کچی آبادیاں ختم نہیں کی جائیں گی۔ اس کے بعد سپریم کورٹ نے سماعت چار ہفتوں کے لیے ملتوی کردی ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ دہلی میں ریلوے اراضی پر 48 ہزار کچی آبادیوں کو ہٹانے کے سپریم کورٹ کے حکم کے خلاف پیر کو کانگریس کے لیڈراجے اماکن کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس ایس اے بوبڑے ، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس وی رام سبرمنئم نے اس پرسماعت کی ۔سینئرایڈوکیٹ ابھیشیک منو سنگھوی اس معاملے میں ماکن کی طرف سے پیش ہوئے ۔