فروغ انسانی وسائل کے مرکزی وزیر نے اعلی تعلیمی اداروں کی آل انڈیا رینکنگ 2020 کا ورچوئل اجرا کیا

نئی دہلی:فروغ انسانی وسائل کے مرکزی وزیر جناب رمیش پوکھریال نشنک نے آج 5 زمروں میں کارکردگی کی بنیاد پر اعلی تعلیمی اداروں کی درجہ بندی ‘‘ انڈیا رینکنگس 2020 ’’ کا اجرا کیا۔ وزیر موصوف نے فروغ انسانی وسائل کے وزیر مملکت جناب سنجے دھوترے، ایڈیشنل سیکریٹری (اعلی تعلیم)، جناب راکیش رنجن ، ایم ایچ آر ڈی ، چیئرمین یو جی سی ، پروفیسر ڈی پی سنگھ، چیئرمین ، اے آئی سی ٹی ای انل سہسر بدھے، چیئرمین ایم بی اے، پروفیسر کے کے اگروال، ممبر سکریٹری این بی اے ڈاکٹر انل کمار نسّا اور اعلی تعلیمی اداروں کے نمائندوں کی موجودگی میں 10 زمروں میں انڈیا رینکنگس 2020 کا ورچوول طریقے سے اجرا کیا۔ ہندوستان میں اعلی تعلیمی اداروں کی انڈیا رینکنگس کا یہ لگاتار پانچواں ایڈیشن ہے۔ سال 2020 میں گزشتہ 9 زمروں میں ایک مزید زمرہ ڈینٹل پہلی بار شامل کیاگیا ہے جس سے کل زمرے 10 ہوگئے ہیں۔
اس موقعے پر خطاب کرتے ہوئے وزیر موصوف نے کہا کہ اس درجہ بندی سے جہاں طلبا کو معیارات کے ایک سیٹ کی بنیاد پر یونیورسٹیوں کا انتخاب کرنے میں رہنمائی حاصل ہوگی وہیں یونیورسٹیوں کو درجہ بندی کے مختلف معیارات کے معاملے میں اپنی کارکردگی بہتر بنانے اور تحقیق اور بہتری کے معاملے میں خامیوں کی شناخت کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ قومی سطح پر اداروں کی درجہ بندی سے اداروں کے درمیان بہتر کارکردگی اور بین الاقوامی درجہ بندی میں اعلی مقام حاصل کرنے کےلئے مسابقت کا جذبہ پیدا ہوگا۔

جناب پوکھریال نے کہا کہ فروغ انسانی وسائل کی وزارت نے ایک قومی ادارہ جاتی درجہ بندی کا فریم ورک (این آئی آر ایف) تیار کرنے کے لئے یہ اہم پہل کی ہے جو کہ مختلف زمروں اور علم کے شعبے میں اعلی تعلیمی اداروں کی درجہ بندی کے لئے گزشتہ 5 سال سے استعمال کیا جارہا ہے اور حقیقت میں یہ ہم سبھی کے لئے حوصلہ افزائی کا ایک ذریعہ ہے۔
جناب نشنک نے کہا کہ کووڈ۔ 19 کے مشکل وقت میں آن لائن کام کاج کی سہولت مہیا کرانے کے لئے این ٹی اے نے جے ای ای اور این ای ای ٹی طلبا کے لئے نیشنل ٹسٹ ابھیاس ایپ شروع کیا ہے اور تقریباً 65 لاکھ طلبا آن لائن ٹسٹ کی مشق کرنے کے لئے اس ایپ کو پہلے ہی ڈاؤن لوڈ کرچکے ہیں۔
وزیر موصوف نے وزارت کے افسروں ، نیشنل بورڈ آف اکریڈیٹیشن کے ممبر سکریٹری اور این بی اے اور آئی این ایف ایل ئی بی این ای ٹی سینٹر میں گزشتہ پانچ برسوں سے بلا رکاوٹ انڈیا ریکنگنس جاری کرنے کے لئے مبارکباد دی۔ انہوں نے مختلف زمروں اور موضوعات میں پہلے تین مقامات حاصل کرنے والے اداروں کو بھی مبارکباد دی۔
فروغ انسانی وسائل کے وزیر مملکت جناب سنجے دھوترے نے بھی ‘انڈیا رینکنگس 2020’ میں اعلی مقام حاصل کرنے والے اداروں کو مبارکباد دی اور سبھی ایسے دیگر اداروں کی حوصلہ افزائی کی جو اس سال اعلی مقامات حاصل نہیں کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ ایسی درجہ بندی میں حصہ لینے سے ادارے کا اعتماد ظاہر ہوتا ہے اور حصہ لینا کامیابی کی سمت میں پہلا قدم ہے۔ اس ادارے کے اعتماد کو فروغ ملتا ہے ۔ جناب دھوترے نے کہا کہ شفافیت اور صحت مند مسابقت کے لئے درجہ بندی ضروری ہے۔
مجموعی زمرے ، مخصوص زمرے اور مخصوص میدان کی درجہ بندی کے لئے انڈیا رینکنگس 2020 کے تحت درجہ بندی کے لئے مجموعی طور پر 3771 منفرد اداروں نے حصہ لیا۔ مجموعی طور پر ان 3771 درخواست کنندہ اداروں میں 294 یونیورسٹیاں ، 1071 انجینئرنگ ادارے، 630 منیجمنٹ ادارے 334 فارمیسی انسٹی ٹیوٹس، 97 قانونی ادارے ، 118 میڈیکل انسٹی ٹیوٹس ، 48 آرکی ٹیکچر ادارے اور 1659 جنرل ڈگری کالج شامل تھے ۔