علمی دنیا ایک بڑے محدث اورعالم جلیل سے محروم ہوگئی،مولاناحبیب الرحمٰن اعظمیؒ کی وفات پرمولانااحمدولی فیصل رحمانی کااظہارتعزیت

مونگیر:محدث کبیر،استاذالاساتذہ مولاناحبیب الرحمن اعظمیؒ کے انتقال پرخانقاہ رحمانی مونگیرکے سجادہ نشیں مولانااحمدولی فیصل رحمانی نے گہرے رنج وغم کااظہارکیاہے۔سجادہ نشیں محترم نے اپنے تعزیتی بیان میں کہاہے کہ حضرت مولانانورعالم خلیل امینیؒ کے بعدمحدث اعظم مولاناحبیب الرحمٰن اعظمی کی وفات دارالعلوم دیوبندکاہی نقصان نہیں بلکہ علمی دنیاکابڑاخسارہ ہے۔حضر ت مولاناحبیب الرحمٰن اعظمیؒ جلیل القدرعالم دین اوربڑے محدث تھے،متعددکتابوں کے مصنف تھے ،علم حدیث اورعلم اسماء الرجال پران کی زبردست گرفت تھی۔لانبے عرصے تک انھوں نے دارالعلوم دیوبند میں طویل تدریسی خدمات انجام دیں۔وہ استاذالاساتذہ تھے۔ان کے شاگردوں کی بڑی تعدادان کے لیے ذخیرۂ  آخرت ہوگی ان شاء اللہ ۔اللہ تعالیٰ ان کے درجات بلندکرے ،خدمات قبول کرے اوردارالعلوم دیوبندکوان کامتبادل عطاکرے آمین۔مولانااحمدولی فیصل رحمانی نے ان کے اہل خانہ اورام المدارس دارالعلوم کے ذمے داران سے اظہارتعزیت کرتے ہوئے کہاہے کہ مولاناعلیہ الرحمہ علم کے سمندرتھے۔آپ کی بڑی علمی شخصیت تھی۔آپ اصحاب علم کے مرجع تھے۔آپ کی وفات ان سبھوں کے لیے بڑانقصان ہے۔سجادہ نشیں نے یہ بھی کہاکہ دادامحترم حضرت امیرشریعت مولانامنت اللہ رحمانیؒ سے انھیں عقیدت تھی،چنانچہ جب امیرشریعتؒ دیوبندجاتے تونیازمندانہ تشریف لاتے۔آپ کے وصال پرخانقاہ رحمانی میں دعاؤں کااہتمام کیاگیا۔