درگاپوجاروکنے والوں کوعوام معاف نہیں کر ے گی،مغربی بنگال کی انتخابی ریلی سے مودی کاخطاب

ہگلی:بی جے پی ’وکاس ‘کانعرہ تولگاتی ہے لیکن الیکشن میں وہ مندر،مذہب اورپوجاکے نام پراترجاتی ہے۔اس سے مہنگائی،بدعنوانی،بے روزگاری اورمعاشی عدم استحکام پرسوال سے بچنے کاراستہ مل جاتاہے۔اب درگاپوجاکے نام پرووٹ مانگاجارہاہے۔ مغربی بنگال میں بھارتیہ جنتا پارٹی ممتا بنرجی کے مضبوط گڑھ کوڈھانے کے لیے بی جے پی مصروف ہے۔ پیر کے روز ہوگلی میں وزیر اعظم نریندر مودی نے بی جے پی کے حق میں ایک جلسہ عام سے خطاب کیا اور ممتا بنرجی حکومت کو شدید نشانہ بنایا۔ وزیر اعظم نے ممتا بنرجی پرخوشامد کی سیاست کاالزام عائد کرتے ہوئے کہاہے کہ یہ سیاست بنگال کے عوام کو درگا پوجا سے روکتی ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ بنگال کے عوام اپنے ثقافت کی توہین کرنے والے کسی کو کبھی معاف نہیں کریں گے۔وزیر اعظم نے کہاہے کہ بنگال میں بی جے پی کی حکومت کے قیام کے بعد ، ہر ایک اپنی ثقافت کو بڑھاوا دے گا۔ مودی نے کہا ہے کہ مغربی بنگال میں جتنی بھی حکومتیں ہیں ، انہوں نے اپنی حالت میں اس تاریخی علاقے کو چھوڑ دیا اور یہاں کے ورثہ کوختم ہونے دیا۔ وندے ماترم بھون جہاں بنکیم چند 5 سال رہتے تھے ، کہتے ہیں کہ ان کی حالت بہت خراب ہے۔ یہ بنگال کے فخرکے ساتھ بہت بڑی نا انصافی ہے۔ مودی نے کہاہے کہ اس ناانصافی کے پیچھے بہت ساری سیاست ہے اوریہی وہ سیاست ہے جو حب الوطنی ، ووٹ بینک ، سب کی ترقی کی بجائے استحصال پر زور دیتی ہے۔