ڈاکٹرکفیل خان کی رہائی کا حکم،پرینکا سمیت کئی اپوزیشن لیڈروں نے یوپی حکومت کو گھیرا

نئی دہلی:الہ آباد ہائی کورٹ نے گورکھپور کے ڈاکٹر کفیل خان پر اترپردیش حکومت کی طرف سے عائد این ایس اے کو ہٹانے کی ہدایت دی ہے۔ منگل کو اس معاملے میں فیصلہ سناتے ہوئے عدالت نے ڈاکٹر کفیل کو فوری رہا کرنے کوکہا ہے۔ اب اس فیصلے کے بعد حزب اختلاف کے رہنماؤں کی طرف سے بھی ردعمل شروع ہوگئے ہیں، ساتھ ہی یوگی حکومت کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ کانگریس کی جنرل سکریٹری اور اتر پردیش کی انچارج پرینکا گاندھی نے کہا کہ آج الہ آباد ہائی کورٹ نے این ایس اے کو ختم کرکے ڈاکٹرکفیل خان کی فوری رہائی کا حکم دیا۔ امیدہے کہ یوپی سرکار ڈاکٹر کفیل خان کو بغیر کسی تاخیرکے رہا کرے گی۔ ڈاکٹر کفیل خان کی رہائی کی کوششوں میں لگے تمام انصاف پسند لوگوں اور یوپی کانگریس کے کارکنوں کو مبارکباد۔عام آدمی پارٹی کے رہنما سنجے سنگھ نے بھی ٹویٹ کرکے یوگی حکومت کوگھیراہے ۔ سنجے سنگھ نے لکھا کہ کفیل خان کیس میں ہائی کورٹ کے فیصلے سے یوگی حکومت کا غیر منصفانہ چہرہ بے نقاب ہوا ہے۔ غور سے پڑھو یوگی جی ، ہائی کورٹ نے کہاکہ کفیل خان کی تقریر قومی اتحاد اور سالمیت کی اپیل کرتی ہے اور یوگی جی نے کفیل کو غدار قرار دیا، یہ شرمناک ہے۔یوپی کانگریس کی جانب سے ٹویٹ کرکے یہ لکھا گیا تھا کہ انصاف کے پیش نظر ڈاکٹر کفیل خان پر این ایس اے میں اضافہ غیر قانونی تھا۔ لیکن انصاف کو روزانہ کچلنے والی یوپی حکومت کو اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے۔ آج انصاف کی جیت ہوئی ہے۔