ڈاکٹرہوں اور ڈاکٹر ہی رہناہے،کسی پارٹی میں جانے کانہیں سوچا:ڈاکٹرکفیل خان

لکھنؤ:این ایس اے (نیشنل سیکیورٹی ایکٹ-این ایس اے) کے چارجز کے بعدحال ہی میں جیل سے رہائی کے بعدڈاکٹرکفیل خان نے کہاہے کہ کانگریس میں شمولیت کی قیاس آرائیاں نہیں ہونی چاہئیں۔وہ صرف ڈاکٹر باقی رہنا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وہ صرف کانگریس ہی نہیں، کسی اور پارٹی میں شامل ہونے کے بارے میں بھی نہیں سوچ رہے ہیں۔راجستھان میں موجود کفیل خان نے پیرکو ٹیلیفون پربتایا کہ وہ کسی بھی سیاسی پارٹی میں شامل نہیں ہوں گے۔انھوں نے کہا کہ کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکاگاندھی واڈرانے اترپردیش حکومت کی طرف سے کسی اور معاملے میں ملوث ہونے کے خوف کے پیش نظر انسانیت کی بنیادپر میری مددکی تھی لیکن یہ نہیں سمجھا جاناچاہیے کہ میں کانگریس میں شامل ہونے جا رہاہوں۔کفیل خان نے کہا کہ پرینکاگاندھی سے سیاست کے سلسلے میں کوئی بات نہیں ہوئی ہے اور مجھے پرینکاگاندھی کی طرف سے کوئی اشارہ بھی نہیں ملاہے۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ ستمبر میں الہ آباد ہائی کورٹ کے حکم کے بعد ، جب میری رہائی میں تاخیرہوئی توخدشہ ظاہر کیاگیاکہ اترپردیش حکومت مجھے کسی معاملے میں دوبارہ ملوث کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔ راجستھان میں کانگریس کی حکومت ہے اور متھرا سے بھرت پور جانے والی سڑک محض 20 منٹ کی ہے ، لہٰذاپرینکاگاندھی نے مجھے بھرت پور آنے کی پیش کش کی۔ کفیل خان نے پرینکاگاندھی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے راجستھان میں مجھے تح