شہنشاہ جذبات، بالی ووڈ کے نابغہ اداکار دلیپ کمار کا انتقال

ممبئی: شہنشاہ جذبات یوسف خان عرف دلیپ کمار نے آج ساڑھے سات بجے صبح 98 سال کی عمر میں اس دار فانی سے کوچ کیا۔وہ سانس کی بیماری کے ساتھ مختلف بیماریوں میں مبتلا تھے اور اسپتال میں زیر علاج تھے۔فلم انڈسڑی میں ان کا سکہ چلتا تھا۔پہلی بار دیویکا رانی نے اپنے ساتھ لیڈ رول میں انہیں موقع دیا تھا۔گنگا جمنا کی ریلیز کے بعد وہ فلم انڈسٹری پر چھا گٸے تھے۔وہ جب کسی ادبی محفل میں تقریر کرتے تو ان کے منھ سے پھول جھڑتے۔اتنی اچھی اردو آج تک کسی فلمی ہیرو کے منھ سے نہیں سنی گئی۔
انہیں دادا صاحب پھالکے ایوارڈ بھی ملا اور پدم بھوشن سے بھی سمانت کیا گیا۔22 برس کی ساٸرہ بانو سے شادی کے وقت ان کی عمر 44 سال تھی۔مغل اعظم ان کی شاندار فلم تھی اس کی ہیروئن مدھوبالا کے تئیں ان کے دل میں نرم گوشہ ابھرا مگر مدھوبالا کے والد کے سخت گیر رویے کی وجہ سے یہ پروان نہ چڑھ سکا۔ کسی بھی فلم میں دلیپ کمار نے کبھی ہیروئن کو گود میں نہیں اٹھایا ایک شائستہ دوری ہمیشہ بناٸے رکھی، سائرہ بانو نے نہ صرف ان کا ساتھ نبھایا بلکہ انہوں نے جی جان سے ان کی خدمت بھی کی۔
دلیپ کمار، راج کپور اور دیوانند کی تکڑی مشہور تھی،کبھی کبھی راج کمار بھی اس گروپ میں شامل ہوجاتے تھے،ان سب میں آخری کڑی دلیپ کمار ہی بچے تھے لیکن وہ آج سب کو الوداع کہ گٸے۔