دیوبند میں”نبی رحمت“کمپین کے تحت بیداری مہم جاری،آپ ﷺ کی تعلیمات تمام انسانوں تک پہنچانا ضروری

دیوبند:(پریس ریلیز)نبی اکرم ﷺ کی شان میں ادنی سے گستاخی بھی مسلمان برداشت نہیں کرسکتے،فرانس میں آپ ﷺ کے خاکے کی اشاعت کو سرکاری اجازت ملنا مغرب کی اسلام دشمنی کو ظاہرکرتا ہے،ہمیں فرانس کے اس عمل سے شدید ترین تکلیف پہنچی ہے اور دنیا کے ہر خطے کے مسلمانوں نے اس تکلیف کو محسوس کیا ہے اور اس کے خلاف اپنے طو ر پر احتجاج بھی درج کرایا ہے اور اس وقت تک احتجاج درج کراتا رہے گا جب تک کہ فرانس اپنے موقف سے پیچھے ہٹ کر مسلمانان عالم سے معافی نہیں مانگ لیتا ان خیالات کا اظہار ”نبی رحمت“کمپین کے تحت منعقدہ بیداری مہم کے دوران الگ الگ قصبات اور دیہی علاقوں میں منعقدہ میٹنگوں اور ملاقاتوں کے دوران معہد کی فاضلات نے کیا اس سلسلے میں غازی آباد کے قصبہ ڈاسنہ میں منعقدہ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے معہد کی فاضلہ افسانہ پیار محمد نے کہاکہ ”نبی رحمت“کے عنوان سے چلائی جارہی اس مہم کا مقصد آپ ﷺ کی تعلیمات کو تمام انسانوں تک پہنچانا ہے اور آپ کے اخلاق حسنہ سے لوگوں کو واقف کرانا ہے انہوں نے فرانس کے حالیہ واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ مغرب یہ سمجھتا ہے کہ وہ آزادیئ اظہار رائے کے نام پر جو کچھ کریگا مسلمان اس کو برداشت کرلیں گے ایسا قطعی نہیں ہے،انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں افسوس ہے کہ ہندوستانی وزارت خارجہ نے فرانس کے صدر میں دیئے گئے ریمارک کو تو افسوس ناک قرار دیا لیکن گستاخی رسالت کو کوئی جملہ نہیں کہا یہ یقیناً ہندوستانی مسلمانوں کے لئے تکلیف کی بات ہے،انہوں نے کہا کہ ہماری ہندوستانی حکومت سے درخواست ہے کہ وہ فرانس سے اپنی حمایت کو واپس لیکر ہندوستانی مسلمانوں کے جذبات کی قدر کرے۔اس موقع پر انہوں نے فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کا اعلان کرتے ہوئے عورتوں کو فرانس کی ان مصنوعات سے متعارف کرایا جو عموماً عورتیں استعمال کرتی ہیں اور ان کے متبادل ہندوستانی مصنوعات کے استعمال کرنے کی ترغیب دی انہوں نے کہا کہ ہم پر واجب ہے کہ ہم فرانس کو معاشی طور پر کمزور کرنے کے لئے ایسے تمام مصنوعات کے استعمال کو فوری طور پر بند کردیں انہوں نے ان مصنوعات کی خرید وفروخت کرنے والے ہندوستانی بھائیوں سے بھی درخواست کی ہے وہ ان مصنوعات کے مقابلے میں ہندوستانی مصنوعات کی خرید وفروخت کریں۔اس موقع پر حامدہ،فاطمہ،سلمی،کشور،فرحہ وغیرہ موجود رہیں۔ضلع مظفر نگر کے گاؤں باغوں والی میں بھی ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں معہد کی فاضلہ ثوبیہ نے اپنے خیالات کااظہار کرتے ہوئے بتایا کہ نبی رحمت کی تعلیمات دنیا وآخرت میں کامیابی کی ضامن ہیں،اگر ہم نبی رحمت کے بتائے ہوئے طریقے پر عمل پیرا ہوں تو ہمارے لئے دونوں جہانوں کی کامیابی ہے انہوں نے کہاکہ نبی اکرم سے محبت ہمارے ایمان کا جزو ہے دنیا کا ادنیٰ سے ادنیٰ مسلمان بھی نبی اکرم کی شان میں گستاخی برداشت نہیں کرسکتا انہوں نے فرانسیسی صدر کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ گستاخ رسول ہمیشہ اپنے عبرتناک انجام کو پہنچا ہے اور ہمیں امید ہے کہ جو بھی شان رسالت میں گستاخی کرے وہ اپنے انجام کو پہنچے گے۔اس موقع پر انہوں نے موجود خواتین کے سامنے فرانسیسی مصنوعات کی تصویر دکھائی اور ان کے استعمال سے بالکلیہ اجتناب برتنے کی تلقین کرتے ہوئے ہندوستانی مصنوعات کے استعمال کی ترغیب دی۔انہوں نے بتایا کہ اگر ہم ہندوستانی مصنوعات کو ان کے متبادل کے طور پر استعمال کرتے ہیں تو جہاں ایک طرف فرانس کو معاشی نقصان ہوگا وہیں دوسری طرف ہمارے ملک کو معاشی فائدہ بھی ہوگا۔صوبہ بہار کے ضلع سیتامڑھی،پورنیہ،ارریہ اور دیگر چند اضلاع میں انوکھے طور پر اس تحریک کو بڑھایا گیا وہاں کی فاضلات نے گھر گھر جاکر عوامی بیداری کے لئے خواتین سے ملاقات کی اور انہیں سنتوں پر عمل کرنے کی جانب راغب کرنے کے ساتھ فرانس کے سامان کے بائیکاٹ کرنے کی بھی اپیل کی اس موقع پر زینب،ثنا،نفیسہ روحی،صبا،خالدہ،الویرہ،زاہدہ،صادقہ،بشریٰ مرحبا وغیرہ موجود رہیں۔