دہلی وقف بورڈ:امانت اللہ خان کی جانب سے ممبر کی نامزدگی کو چیلنج کرنے والے درخواست گزار کو راحت نہیں

نئی دہلی:دہلی نے قومی دارالحکومت دہلی میں عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے امانت اللہ خان کی جانب سے دہلی وقف بورڈ کا ممبر منتخب ہونے کے لئے دائر نامزدگی کو چیلنج کرنے والے درخواست گزار پر عائد 25000 روپے جرمانے معاف کر نے سے ہائی کورٹ نے انکارکردیاہے۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ درخواست گزار نے اپنی درخواست میں کہا تھا کہ اگر جرمانہ عائد ہوتا ہے تو وہ اسے ادا کرے گا اور اس کے پاس وسائل ہیں لیکن اب وہ معاشی تنگی کا دعویٰ کررہاہے۔ چیف جسٹس ڈی این پٹیل اور جسٹس پرتیک جالان کی بنچ نے درخواست گزار محمد طفیل خان سے کہاکہ کس نے آپ سے درخواست دائر کرنے کو کہا؟بنچ نے جرمانہ معاف کرنے کی درخواست کو بھی خارج کردیا۔ عدالت نے جرمانے کی رقم کم کرنے کی درخواست گزار کی درخواست پر سماعت سے بھی انکار کردیا۔ قابل ذکر ہے کہ ا پنے آپ کو ایک سماجی کارکن بتانے والے طفیل خان نے دعویٰ کیاتھا کہ دہلی حکومت کے ذریعہ آپ کے ممبر اسمبلی کو انتخاب کے لئے بورڈ کے کسی ممبر کو نامزد کرنا غیر قانونی، من مانی اور امتیازی سلوک ہے۔