دہلی تشدد:اسمبلی کی کمیٹی نے فیس بک کے نائب صدرکوطلب کیا

نئی دہلی:دہلی فسادات کے معاملے میں دہلی قانون ساز اسمبلی کی ایک کمیٹی نے فیس بک کے ایک سینئر عہدیدار کو طلب کیا ہے اوران سے وضاحت دینے کے لیے حاضر ہونے کوکہاہے۔ دہلی اسمبلی کمیٹی برائے امن وہم آہنگی نے فیس بک کے نائب صدراورمنیجنگ ڈائریکٹر اجیت موہن سے 15 ستمبر کو کمیٹی کے سامنے پیش ہونے کو کہا ہے۔دہلی قانون ساز اسمبلی کی اس کمیٹی کی سربراہی ایم ایل اے راگھوچڈھا کررہے ہیں۔ راگھو چڈھا نے کہاہے کہ کمیٹی اس بنیادی نتیجے پر پہنچی ہے کہ دہلی فسادات کوبھڑکانے میں فیس بک بھی ملوث ہے۔ فیس بک کی ملزم کی حیثیت سے تفتیش کی جانی چاہیے۔کمیٹی نے کہاہے کہ گواہوں کی جانب سے پیش کردہ مضبوط شواہد کی روشنی میں کمیٹی کا خیال ہے کہ دہلی فسادات کی تحقیقات میں فیس بک پرشریک ملزم کی حیثیت سے چارج ہونا چاہیے۔اب اسمبلی کی اس کمیٹی نے فیس بک کو ایک نوٹس بھیجا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ فیس بک کو کچھ عینی شاہدین کے بیانات اور ان کے پیش کردہ شواہد کی بنیاد پر پیش ہوناہے۔ وال اسٹریٹ جرنل نامی ایک اخبار کے انکشاف کے بعد یہ کارروائی دہلی اسمبلی کی امن وخیرسگالی کمیٹی نے کی ہے جب ایک بی جے پی لیڈر کی فیس بک پوسٹ پر ایک فیس بک اہلکار نے کارروائی کرنے سے انکار کردیا تھا۔دہلی اسمبلی کے ارسال کردہ نوٹس میں کہاگیاہے کہ فیس بک کے نائب صدر اجیت موہن کو 15 ستمبر کو 12 بجے دہلی اسمبلی لاؤنج میں حاضر ہونے کے لیے کہاگیاہے۔