دہلی تشدد: یو اے پی اے کیس میں جامعہ کے طالب علم آصف اقبال تنہا کی ضمانت کی درخواست مسترد

نئی دہلی:دہلی کی ایک عدالت نے فروری میں مشرقی دہلی میں تشدد کے ایک مقدمے میں جامعہ ملیہ اسلامیہ (جے ایم آئی) کے طالب علم آصف اقبال کی ضمانت کی درخواست مسترد کردی ہے ۔ ایڈیشنل سیشن جج امیتابھ راوت نے کہا کہ گواہوں کے بیانات میں ملزم تنہا سمیت متعدد ملزمان کا کردار دکھا ئی دیا ہے اور یہ سب منصوبہ بند طریقے سے کیا جارہا تھا۔ عدالت نے کہا کہ ملزم آصف اقبال تنہا دہلی تشدد کے دوران ٹریفک جام کرنے کی سازش کا حصہ تھا۔ عدالت نے 2 ستمبر کو اپنے حکم میں کہا ہے کہ گواہوں کے بیانات کی بنیاد پر آصف اقبال کا نام پوری سازش میں ایک اہم رابطہ کار کے طور پر سامنے آیا ہے۔24 سالہ آصف اقبال کو 19 مئی کو گرفتار کیا گیا تھا اور وہ 27 مئی سے عدالتی تحویل میں ہیں۔ عدالت نے اپنے حکم میں مزید کہا ہے کہ ان گواہوں کے بیانات کی تفصیلات نہیں دی گئی ہیں کیوں کہ اس کیس کی تفتیش ابھی جاری ہے۔ عدالت نے کہاکہ مجھے یہ ماننے میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں ہے کہ ملزمان کے خلاف الزامات درست ہیں۔