دہلی تشدد:شاہ رخ پٹھان کی ضمانت کی درخواست مسترد

نئی دہلی:دہلی ہائی کورٹ نے گذشتہ سال فروری میں شہر کے شمال مشرقی علاقے میں فرقہ وارانہ تشدد کے دوران پولیس ہیڈ کانسٹیبل پربندوق دکھانے کے الزام میں ایک شخص کی ضمانت کی درخواست جمعرات کو خارج کردی ہے۔عدالت نے کہاہے کہ واقعے کی ویڈیو کلپ نے عدالت کے ضمیر کو ہلا کر رکھ دیا کہ ملزم امن و امان کو کس طرح اپنے ہاتھ میں لے سکتا ہے۔جسٹس سریش کمار کیت نے کہاہے کہ اس سے قطع نظر کہ آیا ہوا میں فائرنگ کے دوران ملزم شاہ رخ پٹھان کی نیت پولیس افسرکو یا موقع پر موجودلوگوں کو مارنا تھا یا نہیں ، اس بات پر یقین کرنا مشکل ہے کہ اسے معلوم نہیں تھا کہ وہ موقع پر تھا ،وہ کسی کوبھی نقصان پہنچاسکتا ہے۔عدالت نے کہا ہے کہ صرف یہی نہیں ، یہ درخواست گزار کا معاملہ نہیں ہے کہ وہ مبینہ واقعے میں ملوث نہیں تھا۔اس عدالت کے پیش نظر نچلی عدالت نے ٹھیک کہا ہے کہ درخواست گزار پر فسادات میں ملوث ہونے کا الزام ہے اور اس کی تصویر میں اس کی شمولیت کے بارے میں بہت کچھ کہا گیا ہے۔جج نے کہا ہے کہ درخواست گزار کے جرم کی سنگینی اور موجودہ معاملے کے حقائق پر بھی غور کرتے ہوئے ، میں درخواست گزار کو ضمانت نہیں دے سکتا۔ استغاثہ کے معاملے کی خوبیوں پر تبصرہ کرنے سے گریزکرتے ہوئے یہ عرضی خارج کردی گئی ہے۔