دہلی پولیس پر کرونا وائرس کا خطرہ،اب تک 45اہلکار متاثر

نئی دہلی:کرونا وائرس کے سائے میں پولیس اہلکار اپنی ڈیوٹی دے رہے ہیں۔ اقتصادی دارالحکومت ممبئی کے بعد اب دہلی پولیس کے سپاہی بھی کرونا وائرس انفیکشن کی زد میں آ رہے ہیں۔ اب تک دہلی کے 45 پولیس اہلکاروں کی رپورٹ مثبت آ چکی ہے۔ دہلی پولیس تک پہنچنے والا انفیکشن بڑھتا ہی جا رہا ہے۔ سینکڑوں پولیس اہلکار کووارنٹین کئے گئے ہیں۔ خطرے کے باوجود پولیس اہلکار سخت دھوپ میں دہلی کی سڑکوں پر لاک ڈائون کے قوانین پر عمل کرا رہے ہیں۔کوئی گانے گنگنا کر کرونا وائرس کے خوف کو چیلنج دے رہا ہے، تو کوئی کچھ اور ترکیب آزما رہا ہے۔ 17 ماہ کی بچی کو گھر میں اکیلا چھوڑ کر گریٹر کیلاش علاقے میں ڈیوٹی کر رہی نیلم سے جب بچی کے سلسلے میں پوچھا گیاتو ان کی آنکھیں بھرآئیں۔ انہوں نے نم آنکھوں سے بتایا کہ وہ بچی کو جلدی گود میں نہیں لیتیں۔بحران کی اس گھڑی میں ملک کی خدمت کو اپنا فرض بتاتے ہوئے نیلم نے کہا کہ وہ گھر جانے کے بعد ماسک بناتی ہیں، جسے لوگوں کوبغیر کسی قیمت کے دیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سب سے زیادہ دکھ اس وقت ہوتاہے جب لوگ لاک ڈائون پر عمل نہیں کرتے۔ راجستھان کی رہائشی ایک دیگر خواتین کانسٹیبل نے اپنے بچوں کو لاک ڈائون سے پہلے ہی گھر بھیج دینے کی معلومات دی اور کہا کہ کرونا وائرس سے ڈر تو ہے، لیکن احتیاط برت رہے ہیں۔بہت سے دیگرپولیس اہلکاروں نے بھی یہ کہا کہ کرونا وائرس سے ڈر تو ہے، لیکن وہ نجات کے لئے تمام ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کر رہے ہیں۔ گریٹر کیلاش کے ایس ایچ او کئی دن سے اپنے گھر نہیں گئے ہیں۔ محب وطن گانوں کی دھن کے درمیان ڈیوٹی کر رہے بہت سے دیگرپولیس اہلکاروں نے بھی گھر سے دور رہنے کی معلومات دی اور کہا کہ لواحقین سمجھاتے ہیں، لیکن وہ بھی یہ بات سمجھتے ہیں کہ ڈیوٹی بھی کرنی ہے۔ وہ گلبس، ماسک وغیرہ کا استعمال کرتے ہوئے دفاع کی کوشش کر رہے ہیں۔دراصل پولیس اہلکاروں کو لاک ڈائون پرعمل کرانے کے دوران لوگوں سے بات چیت کرنی پڑتی ہے۔ کئی بار کرونا وائرس متاثر مریضوں کو اسپتال منتقل کرنے کی ذمہ داری بھی پولیس اہلکاروں کو ہی اٹھانی پڑتی ہے۔ کئی پولیس اہلکار سبزی منڈی میں ڈیوٹی کرتے ہوئے کرونا وائرس کی زد میں آ گئے۔ پھر بھی پولیس اہلکاروں کے حوصلے بلند ہیں۔ غور طلب ہے کہ چاندنی محل تھانے پر تعینات 9 پولیس اہلکار کرونا وائرس مثبت پائے گئے تھے۔اس کے بعد تھانہ 4 دن بعد کھلا تو مقامی شہریوں نے پھولوں سے استقبال کیا۔