دہلی میں کورونا کی تازہ لہر،وزیر اعلیٰ کیجریوال کی بازار بند کرنے کی تجویز

نئی دہلی:مرکزی حکومت کے صحت محکمہ کے سکریٹری راجیش بھوشن نے دہلی میں کوویڈ-19 کی صورت حال کے بارے میں کہا ہے کہ دہلی میں پچھلے دو دنوں میں اعداد و شمار میں کمی واقع ہوئی ہے۔ لیکن ہم ابھی اس کا کوئی معنی نہیں نکالیں گے۔ ابھی یہ رجحان کچھ دن اوردیکھنے کی ضرورت ہے۔ سکریٹری صحت نے کہاہے کہ دہلی میں کورونا وائرس کے انفیکشن کی روک تھام کے لیے فوری اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ جانچ دوگنی کردی گئی ہے۔ روزانہ ایک سے 1.2 لاکھ ٹیسٹ ہو رہے ہیں۔ آر ٹی پی سی آراور اینٹیجن ٹیسٹ متناسب طور پر کیا جارہا ہے۔ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال دہلی کے بازار بند کرنے کی تجویز پر راجیش بھوشن نے کہا کہ سوال یہ ہے کہ اگر ایسی پابندی ہوتی ہے تو پھر اس کاکیارد عمل ہوتاہے۔ اس پردہلی اسٹیٹ مینجمنٹ اتھارٹی ،جس کے صدر لیفٹیننٹ گورنر اور دہلی کے وزیراعلیٰ ممبر ہیں ، وہاں بھی غورہوسکتاہے۔ اگر لیفٹیننٹ گورنر حکومت ہند کے سامنے یہ تجویز پیش کرتے ہیں تو اس پر بھی غور کیا جائے گا۔نیتی آیوگ کے ممبر وی کے پال نے کہاہے کہ ہم دہلی میں آئی سی یو بیڈکواگلے دوسے تین دن میں 3523 سے 6000 سے زیادہ کرنے کی تیاری کر رہے ہیں۔ آئی سی یو بیڈزکی تعدادمیں تقریباََ80فی صد اضافہ کیا جائے گا۔ اس نئے اقدام کے ایک حصے کے طور پر ، سردار ولبھ بھائی پٹیل اسپتال میں آئی سی یوکے 537 بیڈز کی فراہمی کی گئی ہے اور دہلی حکومت 2680 آئی سی یو بیڈ کا انتظام کرے گی۔وی کے پال نے بتایا کہ ریلوے کے پاس بھی مخصوص بستر ہیں۔ آج ان میں سے آٹھ سو بستر تیار ہوجاتے۔ ہم ریلوے کی سہولت کو آئسولیشن وارڈ کے طورپراستعمال کریں گے۔انھوں نے لوگوں سے کہاہے کہ بازار میں ہجوم نہ کریں،پارٹی کم کریں،بوڑھے لوگوں کوگھر سے باہرنہ نکالیں۔ ہم دہلی کے عوام سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اپنی ذمہ داریوں کو بخوبی نبھائیں۔