دہلی میں بس،آٹو،ای رکشہ کی مشروط اجازت،دکانیں بھی کھلیں گی

مذہبی اجتماعات پرپابندی برقرار،سب کچھ مستقل بندنہیں رکھ سکتے:اروند کیجریوال
نئی دہلی:دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے لاک ڈاؤن -4 کو لے کر ریاست کے لیے گائیڈلائن کا اعلان کیاہے۔ انہوں نے کہاہے کہ دہلی میں میٹرو، اسکول، کالج، یونیورسٹی، سنیماہال، مال، تھیٹر، بار، آڈیٹوریم اور جم بند رہیں گے۔ انہوں نے کہاہے کہ تمام مذہبی ادارے بند رہیں گے،سیلون بھی فی الحال بند رہیں گے،شام کو سات بجے سے صبح سات بجے تک گھر سے نکلنے کی اجازت نہیں ہوگی،سوئمنگ پول بھی بندرہیں گے،کسی طرح کی بڑی بھیڑ کو جمع ہونے کی اجازت نہیں ہوگی، کیجریوال نے کہاہے کہ ٹیکسی کیب، آٹواور بسیں چلیں گی۔بسوں میں 20 سے زیادہ مسافر نہیں ہوں گے۔ضروری سامانوں کی ساری دکانیں روز کھلیں گی،باقی دکانیں جفت طاق فارمولے پرکھلیں گی ،تعمیر کا کام شروع کیا جا رہا ہے۔ صرف دہلی کے ورکرزکوکام کرنے کی اجازت ہوگی۔شادی کے لیے صرف 50 لوگ اکٹھا ہو سکتے ہیں،ریستوران صرف گھر کی ترسیل کے لیے کھلیں گے۔آٹو اور ای رکشہ چلانے کی اجازت دی گئی ہے لیکن ایک ہی مسافرسفرکرسکیں گے۔وزیراعلیٰ کیجریوال نے کہاہے کہ جب بھارت میں وائرس آیا تھا تو ہماری تیاری نہیں تھی۔لیکن گزشتہ ڈیڑھ پونے دوماہ کے اندرانتظام کرلیاہے۔اب ہمیں معیشت آہستہ آہستہ کھولنے کی سمت میں توجہ رکھنی ہوگی ۔ کل مرکزی حکومت نے اس بار ے میں کچھ گائیڈلائنس جاری کی ہیں۔اسی کو ذہن میں رکھتے ہوئے دہلی حکومت نے لاک ڈاؤن میں نرمی دینے کا فیصلہ کیاہے۔انہوں نے کہاہے کہ مجھے یقین ہے کہ وبا پر ہم فتح حاصل کریں گے۔لاک ڈاؤن مستقل نہیں رہ سکتاہے۔وائرس اگلے 1-2 ماہ میں ختم نہیں ہونے والاہے۔ اس کے ساتھ زندگی چلانے کی عادت ڈالنی پڑے گی۔معیشت کو آہستہ آہستہ کھولنے کی طرف بڑھناہوگا۔کیجریوال نے کہاہے کہ دہلی میں اب تک 10054 کیسز سامنے آئے ہیں لیکن لوگ ٹھیک ہوکر لوگ گھر جا رہے ہیں۔ اب تک یہاں 4485 لوگ ٹھیک ہوکر گھرجاچکے ہیں۔45 فیصد لوگ ٹھیک ہو گئے ہیں۔