دہلی فسادات: ملزمان نے فوری رہائی کے لیے ٹرائل کورٹ میں اپیل داخل کی

نئی دہلی:جے این یو کی طالبات نتاشا ناروال اور دیونگنا کالیتا نے فسادات کی سازش کے معاملے میں دہلی ہائی کورٹ سے ضمانت ملنے کے بعد فوری رہائی کی درخواست کے ساتھ نچلی عدالت میں اپیل دائر کی ہے۔ایڈیشنل سیشن جج رویندر بیدی جلد ہی اس معاملے کی سماعت کریں گے۔ عدالت نے منگل کے روز پولیس سے ملزم اورضمانت کے بارے میں تصدیق کی رپورٹ طلب کی تھی جو آج پیش کی جانی تھی۔ رات 1 بجے رپورٹ طلب کی گئی لیکن پولیس نے مزید کچھ گھنٹے کے لیے کہا۔ ہائی کورٹ نے منگل کو ٹرائل کورٹ کے فیصلے کوایک طرف رکھتے ہوئے نتاشا ، کلیتا اور جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طالب علم آصف اقبال تنہا کی ضمانت منظور کرلی تھی۔ ضمانت ملنے کے بعد دونوں خواتین کارکنوں نے فوری رہائی کے لیے ٹرائل کورٹ میں اپیل داخل کردی۔ملزم کے وکیل سدھارتھ اگروال نے کہا ہے کہ یہ سب ریاست کے رد عمل کی وجہ سے ہوا ہے۔ سسٹم پر اعتماد کریں۔ہائی کورٹ نے تینوں ملزموں کی ضمانت منظور کرتے ہوئے انہیں 50000 روپے کا ذاتی مچلکہ اور اسی رقم کی دو ضمانتیں پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔ ادھر دہلی پولیس نے ملزم کو ضمانت دینے کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائرکردی ہے۔