دہلی اسمبلی میں امانت اللہ خان نے بی جے پی کوفسادات کاذمہ دارقراردیا،بی جے پی چراغ پا

نئی دہلی:دہلی اسمبلی بجٹ اجلاس کے دوران دہلی فسادات کے معاملے پر کافی ہنگامہ ہوا۔ اوکھلاکے ایم ایل اے امانت اللہ خان نے فسادات کے لیے بی جے پی کوموردالزام قرار دیا۔ اس پربی جے پی کے ایم ایل اے نے ہاتھا پائی شروع کردی اورایک ایم ایل اے ویل تک جاپہنچا۔ہنگامہ آرائی کے دوران ایوان کی کارروائی ملتوی کرنی پڑی۔ دراصل اوکھلاسے عام آدمی پارٹی(آپ)کے ایم ایل اے امانت اللہ خان دہلی قانون سازاسمبلی کی اقلیتی کمیٹی کی پہلی رپورٹ ایوان میں رکھے ہوئے تھے۔امانت اللہ خان نے کہا کہ دہلی کے فسادات میں دہلی حکومت نے املاک کو پہنچنے والے نقصان اور زخمیوں کے معاوضے کا اعلان کیا تھا ، کچھ لوگ اسے حاصل نہیں کرسکے۔ ہم نے یہ معاملہ کمیٹی کے سامنے رکھ دیا تھا۔ ہم نے اس کے لیے کوشش کی۔ فسادات میں 54 افراد ہلاک ہوئے ، 11 ہندو اور 43 مسلمان تھے۔ دہلی حکومت نے 10 لاکھ روپے فی شخص دیئے۔ 244 زخمیوں کو معاوضہ دیاگیاہے۔اس کے علاوہ ، 724 جائیدادوں اور 1190 تجارتی املاک پرمعاوضہ دیاگیاہے۔اب تک 27 کروڑ 19 لاکھ روپے کامعاوضہ دیا جا چکا ہے۔ فسادات میں جن املاک کو نقصان پہنچا ہے ان میں سے 47 تجارتی املاک اور 66 رہائشی ہیں جن کی تاحال تلافی نہیں کی گئی ہے۔