داؤد ابراہیم کی جائیدادکی ہوئی نیلامی،7 میں سے 6 فروخت

اندور:داؤد ابراہیم کی املاک کی بالآخر نیلامی ہوگئی ہے ۔ داؤد ابراہیم کی 7 املاک میں سے 6 فروخت ہوچکی ہیں۔ تاہم ایک پراپرٹی کو نیلامی سے ہٹا دیا گیاتھا۔ دو وکلاء کو داؤد کی 6 املاک ملی ہیں۔ ان میں سے 4، 5، 7، 8 پراپرٹی بھوپندر بھاردواج کو ملی، جبکہ 2 جائیداد 6 اور 9 اجے سریواستو نے لی ہے۔ اس کے ساتھ ہی داؤد کی حویلی کو وکیل اجے سریواستو نے خریدا ہے۔ یہ حویلی 11 لاکھ 20 ہزار میں فروخت ہوتی ہے۔داؤد ابراہیم کے پاس رتناگری ضلع کے کھیڈ میں 13 آبائی جائیدادیں تھیں۔ آج 13 میں سے 7 نیلام ہوچکی ہیں۔ داؤد ابراہیم کی ممبئی کی ضبط کی گئی املاک کوفروخت کرنے کے بعد، سفما یعنی اسمگلر فارن ایکسچینج منیپولیٹر ایکٹ نے آج داؤد ابراہیم کے گاؤں کی آبائی املاک کو نیلام کردیا۔سفیما نے مجموعی طور پر 17 پراپرٹیز کی نیلامی کی ہے، جن میں سے 7 پراپرٹی اکیلے داؤد ابراہیم کی تھیں۔ سیفما کے تفتیشی افسر مناف سید کے مطابق داؤد کے پاس رتناگری کھیڈ میں کل 13 جائیدادیں تھیں، جن میں سے 7 نیلام ہوچکی ہیں۔ ان املاک کی قیمت تقریباً80 لاکھ بتائی گئی تھی۔1993 میں ہونے والے سیریل دھماکوں کے ملزم داؤد ابراہیم کی ممبئی میں کئی املاک ضبط کی گئی تھیں،لیکن حکومت کو ان کی نیلامی میں 25 سال سے زیادہ کا عرصہ لگا۔ سال 2018 میں سافیماداؤد کے گڑھ ناگپڑا میں بنے دو رونق افروز ہوٹل، ڈمبر والا بلڈنگ اور شبنم گیسٹ ہاؤس کوفروخت کرنے میں کامیاب رہی۔ اس کے بعدداؤد کی بہن حسینہ پارکر کے فلیٹ کو بھی نیلام کرنے میں ایجنسی کامیاب رہی ۔ سافیماکے مطابق کورونا کے پیش نظر اس بار کچھ تبدیلی کی گئی۔ اس بار عوامی نیلامی میں تبدیلی کرکے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے نیلامی کی گئی۔