دارالعلوم دیوبند میں گیارہ ماہ بعدتعلیم کا آغاز

حفظ و ناظرہ کے طلبہ کے لیے کھولے گئے دروازے،عربی درجات کے طلبہ کو کرناہوگامزید انتظار

دیوبند:(سمیر چودھری)عالمی وباء کورونا کی وجہ سے ملک میں نافذ ہوئے لاک ڈاؤن کے سبب گزشتہ تقریباً گیارہ ماہ سے متاثرہ تعلیمی سلسلہ کا ایک مرتبہ پھر آغاز ہونے سے تعلیمی اداروں کی رونقیں بھی بحال ہونا شروع ہوگئی ہیں،مرکزی وزارت داخلہ اور حکومت اترپردیش کی جانب سے گائیڈ لائن ملنے کے بعد طویل انتظار کے بعد آخر کار تمام دینی و عصری اداروں کے دروازے بھی طلبہ کے لیے کھول دیے گئے ہیں،حالانکہ ابھی ہوسٹل اور چھوٹے بچوں کی تعلیم کے آغاز کے لیے مزید انتظار کرنا ہوگا۔ اسی کے تحت آج سے عالمی شہرت یافتہ دینی ادارہ دارالعلوم دیوبند میں بھی تعلیمی رونقیں بحال ہونے لگیں اور آج سے ادارہ میں حکومتی گائیڈ لائن کے مطابق تعلیم کا باضابطہ طورپر آغاز کردیاگیاہے۔بدھ کے روز سے دارالعلوم دیوبند کی انتظامیہ نے مقامی طلبہ کے لیے حفظ و ناظرہ قرآن پاک اور دینیات کی درسگاہیں کھول دی ہیں،آج سے ان درجات میں باضابطہ تعلیم کا آغاز ہوگیاہے، لاک ڈاؤن کے بعد سے دارالعلوم دیوبندمکمل طورپر بند تھا۔ حالانکہ عربی درجات کے طلبہ کو ابھی مزید انتظار کرنا پڑےگا ،کیونکہ جب تک حکومت کی جانب سے اقامتی درسگاہوں کے لیے باضابطہ طورپر واضح گائیڈ لائن سامنے نہیں آتی ہے اس وقت تک دارالعلوم دیوبند میں دیگر درجات کی تعلیم شروع نہیں ہوگی۔ جہاں دارالعلوم دیوبند کھلنے سے دیگر اداروں کے ذمہ داران کے لئے امید کی کرن پیدا ہوئی ہے ،وہیں طلبہ کی حفاظت کے لیے تمام احتیاطبی تدابیر اور ضروری اقدامات کیے جارہے ہیں۔ اس بابت دارالعلوم یوبند کے مہتمم مفتی ابوالقاسم نعمانی نے بتایا کہ حفظ و ناظرہ اور دینیات کے لیے ادارہ میں باضابطہ تعلیم کا آغاز کردیاگیاہے، حکومت کی مزید گائیڈ لائن موصول ہونے کے بعد دیگر درجات کی تعلیم کا سلسلہ بھی شروع کردیاجائے گا، انہوں نے بتایاکہ طلبہ کی صحت کے تئیں ادارہ نہایت سنجیدہ اور حساس ہے اور حکومتی گائیڈلائن کے مطابق سبھی احتیاطی تدابیر اختیار کی جارہی ہیں۔