کورووائرس:تبلیغی جماعت کے افراد کی گھر واپسی کے لیے جمعیۃعلماءِ ہند کی کوششیں جاری

نئی دہلی:22/مارچ سے جاری لاک ڈاؤن کی وجہ سے تبلیغی جماعت کے لوگوں کو جوہندوستان کے مختلف علاقوں سے دہلی مرکزمیں آئے تھے وہ پھنس گئے جس کے بعد انہیں مختلف قسم کی پریشانیوں سے دوچارہونا پڑااور دہلی کے نریلہ،سلطان پوری، منڈاولی، دوارکا، بدرپور، تغلق آباد، نیوفرینڈس کالونی، روزایونیووغیرہ میں ایک متعینہ مدت کے لئے کارنٹائین کردیا گیا تھا لیکن چالیس سے پینتالیس دن گزرجانے نے کہ بعد بھی انہیں گھرجانے کی اجازت نہیں دی جارہی تھی ۔ اس سلسلہ میں جمعیۃعلماء صوبہ دہلی کے ناظم اعلیٰ مفتی عبدالرازق مظاہری کی قیادت میں قاری محمد ساجدفیضی سکریٹری جمعیۃعلماء صوبہ دہلی، قاری اسرارالحق رکن عاملہ جمعیۃعلماء صوبہ دہلی نے دہلی حکومت کے وزرا اوراعلیٰ حکام سے ملاقات کرکے اس طرف متوجہ کیا اور ان کی مددسے جماعت کے لوگوں کا گھر جانے کا سلسلہ الحمدللہ شروع ہوا، جمعیۃعلما صوبہ دہلی کا وفد جس میں قاری دلشادقمر مظاہری نائب صدرجمعیۃعلماء صوبہ دہلی اور ڈاکٹر رضاء الدین شمس رکن جمعیۃعلماء صوبہ دہلی مسلسل شروع سے ان تبلیغی جماعت کے ساتھ کھڑہوئے ہیں اور ان کے کھانے پینے کے انتظام سے لیکر گھر جانے کا راستہ ہموارہونے کے بعد ان کے لئے بس ٹرین، اور گاڑیوں کی سہولیات پاسز وغیرہ مہیاکرائے جارہے ہیں کیونکہ ان میں متعدد لوگ ہندوستان کے مختلف صوبوں اور شہروں سے تعلق رکھتے ہیں ۔ جمعیۃعلماء صوبہ دہلی کے ذمہ داران مسلسل روزانہ تمام کارنٹائین سینڑپر جاکر یاپھر اعلیٰ افسران سے رابطہ کرکے اس کارخیر کو بخوبی نبھارہے ہیں۔ اور ابھی بھی جماعت کے بہت سے افرادکو ان کے گھروں تک بھیجنے کے لئے جمعیۃعلماء صوبہ دہلی کی پوری ٹیم رات دن لگی ہوئی ہے۔