کنٹینمنٹ ژون میں نگرانی کےلیے ڈرون کیمرے استعمال کیے جائیں:یوگی

لکھنو:اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ جی نے میڈیکل اسکریننگ، ایمبولینس سروس اور نگرانی کی سرگرمیوں کے سلسلے میں ریاستی صدر دفاتر اور ضلعی سطح پر مربوط کمانڈ سنٹر قائم کرنے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسے ریلیف کمشنر کے دفتر میں نافذ نظام کے خطوط پر چلنا چاہئے۔وزیر اعلی آج یہاں اپنی سرکاری رہائش گاہ پر بلائے گئے ایک اعلی سطحی اجلاس میں انلاک نظام کا جائزہ لے رہے تھے۔ انہوں نے کنٹینمنٹ زون میں نگرانی کے لئے ڈرون کیمرے استعمال کرنے کی ہدایت دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہفتہ اور اتوار کو منعقدہ خصوصی صفائی ستھرائی اور صفائی ستھرائی مہم کے کاموں کی جانچ کے لئے بھی ڈرون کیمرے استعمال کیے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ صنعتی یونٹ مہم کی مدت میں پہلے کی طرح کام کرتے رہیں گے۔
وزیر اعلی نے سروے کے ذریعے شہری علاقوں میں گھر گھر جاکر میڈیکل اسکریننگ کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہا کہ نگرانی کرنے والی ٹیموں کو مکمل طور پر متحرک رکھا جائے۔ سروے کی سرگرمیاں مشن موڈ پر کی جانی چاہئیں۔ اس میں کسی قسم کی نرمی نہیں ہونی چاہئے۔تیزی سے اینٹیجن ٹیسٹوں کی تعداد میں مزید اضافہ کرکے جانچ کی گنجائش کو بڑھانے پر زور دیتے ہوئے، وزیر اعلی نے ہدایت کی کہ 25 لاکھ سے کم آبادی والے اضلاع میں، روزانہ کم از کم 500 تیزی سے اینٹیجن ٹیسٹ اور 25 لاکھ سے زیادہ آبادی والے اضلاع میں، ہر روز کم کم از کم 1 ہزار ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹ کروائے جائیں۔ اس کے لئے محکمہ صحت کو ہمیشہ چھوٹے اضلاع میں 5 ہزار اور بڑے اضلاع میں 10 ہزار ٹیسٹنگ کٹس کی دستیابی کو برقرار رکھنا چاہئے۔ نگرانی ٹیم کے سروے میں انفیکشن کے نقطہ نظر سے مشکوک پایا جانے والوں کی تیزی سے اینٹیجن جانچ کی جانی چاہئے۔ ٹیسٹ میں انفیکشن ہونے کی صورت میں، اسے جلد سے جلد کوویڈ اسپتال بھیجنا چاہئے۔ انہوں نے واضح کیا کہ اس کام میں متعلقہ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اور چیف میڈیکل آفیسر کا احتساب طے کیا جائے گا۔
وزیر اعلی نے محکمہ صحت اور میڈیکل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کو ہدایت کی کہ وہ اپنے تمام یونٹوں کو مکمل طور پر متحرک رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ ایمبولینس سروس کو مزید مستحکم کیا جائے۔ کوڈ اور نون کوڈ اسپتالوں کے لئے علیحدہ ایمبولینس کا انتظام کیا جائے۔ ایمبولینس میں آکسیجن کی لازمی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔ اس سے پہلے ہی فیصلہ کیا جانا چاہئے کہ ایمبولینس کے ذریعے کون سے اسپتال میں داخل ہونا ہے۔وزیر اعلی نے ہدایت کی کہ تمام وینٹیلیٹروں کو آپریشنل رکھا جائے۔ یہ یقینی بنانا چاہئے کہ ایڈوانس لائف سپورٹ ایمبولینس میں وینٹیلیٹر چلتے رہیں۔ تمام ایمبولینسوں میں آکسیجن کی دستیابی کو یقینی بنانا ہوگا۔ تکنیکی ماہرین کو وینٹیلیٹر کے کاموں کے لئے بھی تربیت دی جانی چاہئے جبکہ تربیتی سرگرمیاں تیز کرتے ہیں۔ میڈیکل
کالجوں کے نظام کو بہتر بنایا جائے۔