کانگریس نے سرکاربچائی،کنبہ اورپارٹی بچانے کی کوششیں تیز،ممبران اسمبلی ہوٹل شفٹ

جے پور:راجستھان میں جاری سیاسی شورش کے درمیان کانگریس کے اراکین اسمبلی کی میٹنگ جے پور میں وزیراعلیٰ کی رہائش گاہ پرہوئی۔ پارٹی نے اس میٹنگ میں 109 ایم ایل اے تک پہنچنے کا دعویٰ کیاہے۔ راجستھان کی 200ممبران کی اسمبلی میں اکثریت کے لیے 101 ممبران اسمبلی کی ضرورت ہے۔میٹنگ شروع ہونے سے پہلے میڈیاکوبلاکرممبران اسمبلی کامعائنہ کرایاگیااوروزیراعلیٰ ،کانگریس کے نمائندوں اورممبران اسمبلی نے فتح کے نشان کی علامت کے ساتھ ہی سرکاربچانے کاواضح اشارہ دیاہے۔سیشن میںحکومت کو کمزورکرنے والوں کے خلاف قرارداد پاس کی گئی اورکارروائی کا مطالبہ کیا گیا۔ اس میں سچن پائلٹ یا کسی دوسرے ایم ایل اے کانام نہیں ہے۔ کانگریس قانون ساز پارٹی نے وزیراعلیٰ اشوک گہلوت کی حمایت میں ایک قرار داد منظور کی۔ سونیا گاندھی اورراہل گاندھی کی قیادت پر اعتماد کا وعدہ کیا۔میٹنگ ختم ہونے کے بعد چار بسیں وزیرعلیٰ کی رہائش گاہ کے باہر دیکھی گئیں۔ ان بسوں کے ذریعہ ایم ایل اے کو ریزورٹ بھیج دیاگیاہے۔اس درمیان راہل گاندھی،پرینکاگاندھی سمیت کانگریس کی اعلیٰ قیادت نے سچن پائلٹ سے بات کی اورانھیں منانے کی ہرممکن کوشش کی جارہی ہے۔سرکاربچانے کے بعدکنبہ بچانے اورایم ایل اے کی حفاظت میں کانگریس لگ گئی ہے۔ریاستی کانگریس کے صدر اور ڈپٹی چیف منسٹر سچن پائلٹ کے ذریعہ کی گئی بغاوت کی وجہ سے پیدا ہونے والے بحران کے درمیان یہ میٹنگ صبح 10.30 بجے شروع ہونی تھی لیکن اس کی شروعات تقریباََڈیڑھ بجے ہوئی۔میٹنگ شروع ہونے سے پہلے میڈیا کو وہاں موجود ارکان اسمبلی اور لیڈران کی تصاویر لینے کی اجازت تھی۔ جب وہاں موجود ارکان اسمبلی کی تعدادکے بارے میں پوچھاگیاتووزیراعلیٰ اشوک گہلوت نے براہ راست جواب نہیں دیا۔