اپوزیشن ممبران کی معطلی،کانگریس نے کہا:ہندوستان میں ہورہا ہے جمہوریت کا قتل

نئی دہلی:زراعت سے متعلق دو بلوں پر اتوار کے روز راجیہ سبھا میں کافی ہنگامہ ہوا۔ اپوزیشن ارکان پارلیمنٹ نے ایوان میں نعرے بازی کی۔ اس کے ساتھ ہی ’رول بک‘بھی پھاڑ دی اور ایوان کے اسٹیج تک پہنچ گئے۔ ہنگامے کے سبب حزب اختلاف کے 8 اراکین پارلیمنٹ کو آج ایک ہفتہ کے لئے معطل کردیا گیا ہے۔ ارکان پارلیمنٹ کی معطلی پر اپوزیشن جماعتوں نے شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ کانگریس کے سینئر رہنما اور سابق مرکزی وزیر جے رام رمیش نے کہا کہ ہندوستان میں جمہوریت کو قتل کیا جارہا ہے۔ سابق مرکزی وزیر نے پیر کو اپنے ٹویٹ میں لکھاکہ آٹھ ممبران پارلیمنٹ کو بغیر ان کی بات سنے انہیںیک طرفہ طور پر راجیہ سبھا سے معطل کردیا گیا۔معطلی کی تجویز پر کوئی ووٹنگ بھی نہیں ہوئی ،اور اپوزیشن لیڈر کو بولنے کا موقع نہیں دیاگیا۔ وہیں ترنمول کانگریس نے اپنے آفیشل ٹویٹر ہینڈل پر کہاکہ بالکل ناقابل یقین! کل راجیہ سبھا میں حزب اختلاف کے رہنماؤں کی آواز خاموش کرکے بی جے پی نے جمہوریت کا قتل کیا تھا۔ ملک کے شہریوں کو آواز اٹھانی چاہئے، اس سے پہلے کہ ہم مکمل طور پر مودی جی کی آمریت کے ماتحت ہو جائیں۔ مغربی بنگال کی وزیر اعلی اور ترنمول کانگریس کی سربراہ ممتا بنرجی نے ٹویٹ کیاکہ کسانوں کے مفادات کے تحفظ کے لئے لڑنے والے آٹھ ممبران پارلیمنٹ کی معطلی بدقسمتی کی بات ہے، اور اس خود مختار حکومت کی اس سوچ کی عکاسی کرتی ہے کہ وہ جمہوری اصولوں کا احترام نہیں کرتی ہے۔ ہم نہیں جھکیںگے ،پارلیمنٹ اور سڑکوں پر اس فاشسٹ حکومت کا مقابلہ کریں گے ۔