کانگریس کی میٹنگ ،روزگار، جی ڈی پی،کورونااورچینی دراندازی پرحکومت کو گھیرنے کی تیاری

نئی دہلی:منگل کوسونیاگاندھی کی صدارت میں کانگریس کے ممبران پارلیمنٹ کی میٹنگ ہوئی جس میں پارلیمنٹ کے آئندہ اجلاس میں حکومت کاگھیراؤکرنے کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیاگیا۔ذرائع کے مطابق اس میٹنگ میں فیصلہ کیاگیا کہ چینی دراندازی کے معاملے پر وزیر اعظم نریندر مودی کو براہ راست گھیر اجائے۔ اس میٹنگ میں شریک راہل گاندھی نے کہا کہ حکومت نے ابھی تک ہندوستانی سرزمین پرچینی مداخلت کو قبول نہیں کیا ہے ، وزیر اعظم کو اس معاملے پر جواب دیناپڑے گا۔چین کے مسئلے کے علاوہ کورونا وائرس کے تیزی سے بڑھتے ہوئے انفیکشن اور مرکزی حکومت کی بدانتظامی پرگھیرنے کافیصلہ کیاگیاہے۔جی ڈی پی میں زبردست کمی،روزگار کی خراب صورتحال پرغور کرتے ہوئے کانگریس بھی حکومت کومعیشت پر گھیرے گی۔ کانگریس نے راجیہ سبھا میں ڈپٹی چیئرمین کے انتخاب کے لیے بھی اپنے امیدوار کھڑا کرنے کااعلان کیاہے۔میٹنگ میں اس پربھی تبادلۂ خیال کیا گیا۔ اہم بات یہ ہے کہ راجیہ سبھا میں ڈپٹی چیئرمین کے عہدے کے لیے انتخاب 14 ستمبرکوہوگا۔اس دن سے پارلیمنٹ کامانسون اجلاس شروع ہوگا۔ ایوان بالامیں جے ڈی یوراجیہ سبھا ممبر ہریونش نارائن سنگھ کی میعادختم ہونے کے بعدیہ عہدہ خالی ہوگیا ہے۔ ہریونش ایک بار پھر راجیہ سبھا کے ممبرمنتخب ہوئے ہیں۔