کانگریس کا دعویٰ،اویسی کی بی جے پی سے ملی بھگت،ووٹرزاپنا ووٹ ضائع نہیں کریں گے

نئی دہلی:کانگریس کی بہار یونٹ کے سربراہ مدن موہن جھا نے آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کو بی جے پی کی بی ٹیم قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیاہے کہ اسد الدین اویسی سے کوئی اثر نہیں ہوگا کیونکہ لوگ اپنا ووٹ ضائع نہیں کریں گے۔انہوں نے یہ بھی امید ظاہر کی کہ تیجسوی یادو کی قیادت میں عظیم اتحاد کو اس انتخاب میںواضح اکثریت حاصل ہوگی اورکانگریس 2015 کے انتخابات سے بھی بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرے گی۔جھا نے کہاہے کہ اے آئی ایم آئی ایم عظیم اتحاد کے ووٹ میں کوئی روک نہیں ڈال سکے گی کیونکہ ووٹر نیک نیتی کے ساتھ ووٹ دیں گے اور اپنا ووٹ ضائع نہیں کریں گے۔ بہار ریاستی کانگریس کمیٹی کے صدر نے یہ بیان اس وقت دیا جب اسمبلی انتخابات کا تیسرا مرحلہ سیمانچل کے ان علاقوں میں ہونے جارہا ہے جہاں مسلم آبادی بڑی تعداد میں ہے اور اے آئی ایم آئی ایم نے بہت سی نشستوں پر امیدوار کھڑے کیے ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ اس انتخابات میں اے آئی ایم آئی ایم نے اوپیندرکشواہاکی راشٹریہ لوک سمتا پارٹی ، بی ایس پی اور کچھ دوسری پارٹیوں کے ساتھ مل کر گرینڈ ڈیموکریٹک سیکولر الائنس (جی ڈی ایس ایف) تشکیل دیا ہے۔ کشواہا اس اتحاد سے وزیر اعلی کے امیدوار ہیں۔ یہ پوچھے جانے پر کہ کیا اویسی کے زیرقیادت ایم آئی ایم بہار انتخابات کے تیسرے مرحلے میں بڑے اتحاد کو نقصان پہنچا سکتی ہے ، جھا نے کہا ہے کہ ووٹرزاپنا ووٹ ضائع نہیں کریں گے۔وہ بڑی دانشمندی کے ساتھ ووٹ دیں گے۔