کانگریس کے زوال کے لیے راہل گاندھی ذمہ دار، آسام میں پارٹی چھوڑنے والے ایم ایل اے کا کانگریس لیڈر شپ کو پیغام

گوہاٹی : آسام میں آج کانگریس کو اس وقت بڑا دھچکا لگا جب اس کے انتہائی مخلص اور اہم ایم ایل اے نے پارٹی چھوڑکر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) میں شامل ہونے کا اعلان کیا۔ وہ پیر کو بی جے پی میں شامل ہوں گے۔ روپ جیوتی کرمی نے شکایت کی ہے کہ کانگریس نے نوجوان لیڈروں کی باتیں سننا بند کردیا ہے ۔ ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ اگر کانگریس راہل گاندھی کو اتنی اہمیت دیتی رہی تو پارٹی کا خاتمہ ہوجائے گا ۔ چار بار کے رکن اسمبلی کرمی نے اسمبلی سے بھی استعفیٰ دے دیا ہے۔ کانگریس کے ایم ایل اے نے ایک ایسے وقت میں پارٹی کو الوداع کہا ہے جب اتر پردیش میں پارٹی کے ایک اہم لیڈر جیتن پرساد کانگریس چھوڑ کر بی جے پی میں شامل ہوگئے ہیں۔روپ جیوتی کرمی نے کہا کہ ان کے لئے یہ ایک بہت مشکل فیصلہ تھا۔ وہ کانگریس کے ایک خاندان میں پیدا ہوئے اور اس کی والدہ ریاست میں وزیر بھی رہیں۔ کانگریس کے ریاستی اسمبلی میں 29 ایم ایل اے ہیں اور کرمی کی رخصتی سے ایک ایم ایل اے کم ہوگیا ہے۔ روپ جیوتی کرمی نے این ڈی ٹی وی کو خصوصی انٹرویو میںکہاکہ میں کانگریس کے ایک خاندان میں پیدا ہوا ، ہم کانگریس کی ثقافت میں بڑے ہوئے ۔ میں پوسٹر لگاتا تھا۔ میٹنگوں میں چائے دیتا تھا۔ میری والدہ وزیر تھیں۔کانگریس کا سپاہی رہاہوں۔اس لیے یہ یہ فیصلہ لینا مشکل تھا۔کانگریس لیڈر راہل گاندھی کے بارے میں کرمی نے کہاکہ راہل جی کچھ نہیں کرسکتے ہیں۔ وہ کانگریس کے زوال کے ذمہ دار ہیں۔ آسام کے حالیہ اسمبلی انتخابات کے نتائج اس بات کا واضح اشارہ ہیں کہ اگر کانگریس راہل گاندھی کو اہمیت دیتی رہی ہے تواسے نقصان اٹھانا پڑے گا۔