کانگریس کے اقتدار میں آنے پر سپریم کورٹ میں سی اے اے سے متعلق کیس میں آسام حکومت بنے گی فریق:گگوئی

نئی دہلی: کانگریس لیڈر گورو گگوئی نے جمعہ کے روز ترمیم شدہ شہریت ایکٹ (سی اے اے) کو ووٹوں کے لیے معاشرے کو تقسیم کرنے کا بی جے پی کا سیاسی ہتھیار قرار دیتے ہوئے کہا کہ آسام میں ان کی پارٹی اقتدار میں آئے گی سی اے اے کو ریاست میں لاگونہیں کرنے دیاجائے گا اورریاستی حکومت کو اس سے متعلق معاملے میں سپریم کورٹ میں فریق بنایا جائے گا۔لوک سبھا میں پارٹی کے ڈپٹی لیڈر گگوئی نے دیے گئے ایک انٹرویو میں یہ بھی کہا تھا کہ اس اسمبلی انتخابات میں آسام کی شناخت اور نشوونما دونوں داؤپرہیں اور ریاست میں کانگریس کی زیرقیادت ‘مہاجوت’ کے حق میں (مہاگٹھ بندھن) ریاست میں امید کی ہوا چل رہی ہے۔انہوں نے آل انڈیا یونائیٹڈ ڈیموکریٹک فرنٹ (اے آئی یو ڈی ایف) کے ساتھ اتحاد کےلیے کانگریس پر حملہ کرنے پر بی جے پی پرپلٹ وار کیا اور کہاکہ بدر الدین اجمل کا پارٹی کے ساتھ اتحاد مذہب کی بنیادپر نہیں ہے بلکہ اس بنیاد پر ہے کہ کون سی اے اے کے حق میں ہے اورکون اس کی مخالفت میں۔
یہ پوچھے جانے پر کہ کیا وہ آسام میں ’مہاجوت‘ کی فتح کی صورت میں وزیراعلی کے امیدوار ہوں گے؟ گوگوئی نے کہا کہ وہ کبھی بھی کسی عہدے سے پیچھے نہیں ہٹتے اور پارٹی کے کردار کے مطابق وہ کانگریس کی خدمت کریں گے۔قابل ذکر ہے کہ گوگوئی کے والد ترون گگوئی مئی 2001 سے 2016 تک تین مدت کے لیے آسام کے وزیر اعلی رہے تھے۔ گذشتہ سال نومبر میں ان کا انتقال ہوا۔گورو گوگوئی نے کہا کہ کوئی بھی ان کے باپ کے جانے سے پیدا ہونے والا خلا نہیں بھر سکتا۔