کانگریس اور اپوزیشن جماعتیں کسانوں کواکسا رہی ہیں:ارون سنگھ

جے پور:بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری اورراجستھان کے انچارج ارون سنگھ نے پیرکوالزام عائدکیاہے کہ کانگریس اوراپوزیشن جماعتیں کسانوں کی تحریک کو آگے بڑھا رہی ہیں۔ انہوں نے امید ظاہرکی ہے کہ کسان اور حکومت کے مابین ہونے والی بات چیت جلد ہی اثر کرے گی اور تحریک ختم ہوگی۔یہاں بی جے پی اسٹیٹ ہیڈ کوارٹر میں سنگھ نے کہاہے کہ مرکزی حکومت ملک کے کسان کو مضبوط اور خوشحال بنانے کے لیے پرعزم ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کسانوں کی آمدنی کو دوگنا کرنے کے لئے مستقل کوششیں کررہے ہیں۔انہوں نے الزام لگایاہے کہ یہ تشویش کی بات ہے کہ اپوزیشن جماعتوں خاص طور پر کانگریس نے ہمیشہ کسانوں کودھوکہ دیا ہے ، ان کے ساتھ غداری کی ہے اور ان کے لیے کبھی کوئی اچھاکام نہیں کیاہے۔ یہ کسانوں کی تحریک کو ہوا دے رہی ہے۔سنگھ نے دعویٰ کیاہے کہ آج ملک کے بیشتر کسان وزیر اعظم مودی کے ساتھ کھڑے ہیں۔جو بھی انتخابات ہوئے ، چاہے وہ بہارکے انتخابات ہوں،اترپردیش، مدھیہ پردیش اورکرناٹک کے ضمنی انتخابات ، بی جے پی اور وزیر اعظم مودی کی پالیسیوں کوہر جگہ حمایت حاصل ہے۔سنگھ نے کہاہے کہ زرعی اصلاحات کا قانون کسانوں کی زندگی میں یکسر تبدیلیاں لائے گا لیکن کانگریس پارٹی اپنے مفادات کے سبب اس کی مخالفت کر رہی ہے۔ ہم ان کی مذمت کرتے ہیں۔ کچھ کمیونسٹ پارٹی ، علیحدگی پسند تنظیمیں بھی اپنی روٹی پکانے کے لیے کام کر رہی ہیں۔انہوں نے کہاہے کہ فصلوں کی خریداری کے لیے کم سے کم سپورٹ پرائس (ایم ایس پی) ہے اورجاری رہے گا۔ ان قوانین سے کسانوں کو اپنی فصلیں کہیں بھی بیچنے کی آزادی ملے گی۔ارون سنگھ نے امید ظاہرکی ہے کہ کسانوں کی تحریک جلدختم ہوجائے گی۔انھوں نے کہاہے کہ حکومت کسانوں سے کھلے ذہن سے بات کر رہی ہے اور توقع کی جارہی ہے کہ جو کسان احتجاج کر رہے ہیں وہ بھی جلد ہی اپنا احتجاج ختم کردیں گے۔