یوپی: چودھری نریش ٹکیت کا بیان ، کہا ، 5 ستمبر کو مہا پنچایت میں کچھ ’خاص‘ ہو گا

مظفر نگر : یوپی کے مظفر نگر میں 5 ستمبر کو منعقد ہونے والی کسان مہا پنچایت کی تیاریاں زور و شور سے جاری ہیں۔ جی آئی سی گراؤنڈ میں منعقد ہونے والی کسان مہا پنچایت میں متوقع اضلاع کے ساتھ ساتھ ریاست کے شمال مشرقی اضلاع ، ہریانہ اور پنجاب سے کسانوں کی کثیر تعداد میں شرکت متوقع ہے۔ساتھ ہی بی کے یو کے صدر چودھری نریش ٹکیت نے شہر کے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ کسانوں کی خاطر تواضع کریں ،تاکہ باہر سے آنے والے کسانوں کو کھانے پینے اور دیگر قسم کی پریشانیوں کا سامنا نہ کرنا پڑے۔نریش ٹکیت نے کہا کہ 5 ستمبر کو کسان مہا پنچایت میں کچھ خاص ضرور ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ملک کی پروا ہے ، لیکن بی جے پی پارٹی اور حکومت کو ملک یا کسانوں کی کوئی فکر نہیں ہے ۔ مہا پنچایت کے مسائل پر انہوں نے کہا کہ اس پنچایت میں کچھ خاص ہوگا ، لیکن جو خاص ہوگا وہ سب سے الگ ہے ۔آر پار کی جنگ کے سوال پر انہوں نے کہا کہ نہیں ، ہم اسے آر پار کی جنگ نہیں کہہ سکتے ، ہمارے اوپر تو ذمہ داریاں ہیں۔ البتہ انہوں نے کہا کہ معاملہ طویل عرصے تک چلے گا۔چودھری نریش ٹکیت نے کہا کہ ہمیں ملک کی فکر ہے ، اس پارٹی کو ملک کی کوئی پرواہ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ نو ماہ اور سات دن سے ہماری کسان تحریک چل رہی ہے، کئی سو ارب روپے خرچ ہو چکے ہیں۔ اس تحریک کے دوران حکومت کے اس قدر ہٹ دھرم ہونے کی کیا وجہ ہے؟ اگر حکومت پہلے اتفاق کرلیتی تو اس طرح کی صورتحال نہیں ہوتی۔ ہمیں خوشی ہے کہ دیگر ریاستوں کے تمام کسان خاندان متحد ہو رہے ہیں۔ ہم سب اتنی بڑی تحریک کا وزن برداشت کر رہے ہیں۔غور طلب ہو کہ جمعرات کی شام جی آئی سی گراؤنڈ میں انتظامات دیکھنے آئے بی کے یو کے صدر نے کہا کہ شہر کے لوگوں کو اتوار کے دن شہر آنے والے بیرونی کسانوں کو خوش آمدید کہنے کیلئے اپنے گھروں کے دروازے کھلے رکھنے چاہیے۔ مقامی لوگوں کو باہر سے آنے والے کسانوں کے لیے کھانے پینے کے انتظامات میں بھی آگے آنا چاہیے ۔