چین نے ہندوستان کے کتنے علاقوں پر قبضہ کیا،سنیئر وزراء خاموش کیوں؟:اویسی

نئی دہلی:آل انڈیامجلس اتحادالمسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے صدر اور حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی نے کہاہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی ملک میں کورونا کی صورتحال پر قابو پانے میں مکمل طور پر ناکام ہوگئے ہیں۔ اویسی نے پریس کانفرنس میں کہاہے کہ مودی جی سے یہ توقع نہ کریں کہ وہ آپ کو وائرس سے بچائیں گے۔ تالیاں بجانا اورموم بتی جلاناوائرس کو پھیلنے سے نہیں روک سکتاہے۔ وزیر اعظم مودی کے زیرقیادت ہندوستانی حکومت نے کورونا وائرس کی صورتحال کو کنٹرول نہیںکیا۔ وہ ایسا کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن غیر آئینی اور غیر منصوبہ بندتھا۔مودی حکومت نے اس وقت لاک ڈاؤن نافذ کیا جب ملک میں لگ بھگ 500 افراد انفیکشن میں تھے۔ اب لاکھوں افراد انفیکشن میںہیں۔اویسی نے کہاہے کہ لاک ڈاؤن کو اس وقت اٹھایا جا رہا ہے جب کروڑوں تارکین وطن مزدورآبائی ریاست لوٹ رہے ہیں۔ ٹرینوں میں 85 مزدوروں کی موت کا ذمہ دار کون ہے؟ یہ تمام افراد کا تعلق او بی سی اوردرج فہرست قبائل سے ہے۔ کل ایک صحافی کی موت ہوگئی۔ان کے بارے میں کون بات کرے گا؟ یہ حکومت صرف ایک ہاتھی پربات کر رہی ہے۔ حکومت صرف سرخیوں میں دلچسپی لے رہی ہے۔چین کے ساتھ سرحدی تنازعہ پر اویسی نے کہاہے کہ ہندوستانی وزیر داخلہ اور وزیر دفاع نہیںبتاسکتے ہیں کہ واقعتا چین کے ساتھ کیا ہو رہا ہے۔ انہیں ملک کے لوگوں کو بتانا چاہیے کہ کیا ہو رہا ہے۔ وہ خاموش کیوں ہیں؟ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ وزیر اعظم لوگوں کو بتائیں کہ چین نے چین کے کتنے رقبے پر قبضہ کیا ہے۔ بی جے پی اور آر ایس ایس کے حامی اس معاملے پرکیوں خاموش ہیں؟ یہ چین کا کام کرنے کا طریقہ ہے کہ جیسے ہی برف پگھلنے لگے ، وہ ہندوستانی ہیں۔ علاقے پرقبضہ کرو۔