چین نے وادی گلوان پرپھردعویٰ پیش کیا

بیجنگ:چین نے ایک بار پھر وادی گلوان کو اپنا بتایاہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہاہے کہ وادی گولان چین کا حصہ ہے اور وہ لائن آف ایکچول کنٹرول (ایل ایس سی) کی طرف ہے۔ ہندوستانی فوجی یہاں زبردستی سڑکیں اور پل بنا رہے ہیں۔ چینی عہدیداروں نے چار دن میں پانچویں بار بتایا کہ 15 جون کی شام کو ، بھارتی فوجیوں نے جان بوجھ کر ایل اے سی کوعبورکیااور معاہدے کو توڑتے ہوئے چینی فوجیوں پرحملہ کیا۔انھوں نے کہاہے کہ 15 جون کے واقعہ کا ذمہ دار بھارت ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ وادی گولان لائن آف ایکچول کنٹرول کے چینی حصے میں آتا ہے۔ چینی محافظ کئی سالوں سے وہاں گشت کر رہے ہیں اور اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔حکومت نے ہندوستانی فوجیوں کی شہادت اور گولان میں چینی فوجیوں پر حملے سے متعلق ایک جماعتی اجلاس طلب کیا۔ اس میں وزیر اعظم نریندر مودی نے کہاہے کہ ہم نے اپنی فوج کو قدم اٹھانے کی مکمل آزادی دے دی ہے۔ کوئی بھی ہماری ایک انچ کی زمین پر نہیں دیکھ سکتا ہے۔ ہماری سرحد میں کسی نے دخل اندازی نہیں کی اور نہ ہی چین نے ہماری کسی چوکی پر قبضہ کیا۔ ہمارے 20 فوجی شہید ہوئے ، لیکن جنھوں نے بھارت ماتاکوللکارا وہ انہیں سبق سکھانے کے لیے گئے ۔ پورا ملک اس کی بہادری کو یاد رکھے گا۔ اس کی قربانی سے سب کوچوٹ پہنچاہے۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*