چین نے راجیو گاندھی فاؤنڈیشن کو چندہ دیا تھا،کانگریس نے کس شرط پر پیسہ لیا:روی شنکر پرساد

نئی دہلی:مشرقی لداخ کی وادی گلوان میں ہندوستان- چین کے درمیان پرتشدد تصادم کے بعد بی جے پی نے اب کانگریس کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ جمعرات کے روز مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے الزام لگایا کہ راجیو گاندھی کو فاؤنڈیشن نے 2005-06 میں، چین سے تین لاکھ ڈالر (تقریبا ً2 کروڑ 26 لاکھ روپے) کا عطیہ دیا گیا۔ انہوں نے کانگریس سے سوال کیا کہ یہ روپے کس شرائط پر لئے گئے تھے اور چندہ کی اس رقم کیا گیا،اسے کس مدمیں استعمال کیا گیا؟۔روی شنکر پرساد نے کہا کہ کانگریس کے دور میں چین نے ہماری سرزمین پر قبضہ کیا تھا، کانگریس کو بتانا چاہئے کہ راجیو گاندھی فاؤنڈیشن کو یہ رقم چین کے ساتھ آزاد تجارت کے معاہدے (ایف ٹی اے) کو فروغ دینے کے لئے ملی تھی،یعنی درآمد برآمد کو بغیر کسی رکاوٹ کے پورا کیا جائے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ راجیو گاندھی فاؤنڈیشن کوئی تعلیم اور ثقافتی تنظیم نہیں ہے؛بلکہ یہ ایک سیاسی تنظیم ہے۔ کانگریس صدر سونیا گاندھی، راجیو گاندھی فاؤنڈیشن کی چیئرپرسن ہیں۔ سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ، کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی، سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم اور کانگریس کے جنرل سکریٹری پریانکا گاندھی اس کے ممبران میں شامل ہیں۔