چچا بھتیجے کی لڑائی عدالت پہنچی، چراغ پاسوان نے دہلی ہائی کورٹ میں لوک سبھا اسپیکر کے فیصلے کو چیلنج کیا

پٹنہ: وزیر اعظم نریندر مودی کی کابینہ میں آج ردوبدل ہوا ہے۔ پشوپتی پارس کے وزیر بننے پرلوک جن شکتی پارٹی کے لیڈر چراغ پاسوان نے سخت اعتراض درج کیا ہے۔ اسی کے ساتھ ایل جے پی نے دہلی ہائی کورٹ سے رجوع کیا ہے۔ چراغ پاسوان نے دہلی ہائی کورٹ میں درخواست دائر کرکے لوک سبھا اسپیکر کے فیصلے کو چیلنج کیا ہے۔ایل جے پی کے صدر چراغ پاسوان نے کہا کہ پارٹی کے خلاف جانے اوراعلیٰ قیادت کو دھوکہ دینے پر پشوپتی کمار پارس کو پہلے ہی لوک جن شکتی پارٹی سے نکال دیا گیا ہے اور اب پارٹی نے انھیں مرکزی کابینہ میں شامل کرنے پر سخت اعتراض کیا ہے۔ ان کے حق کا احترام کریں کہ وہ اپنی ٹیم میں کسے شامل کرتے ہیں اور کسے نہیں ، لیکن جہاں تک ایل جے پی کا تعلق ہے، پشوپتی پارس ہماری پارٹی کے ممبر نہیں ہیں۔ پارٹی کو توڑنے جیسے کاموں کے پیش نظر ، اگر انہیں اپنے دھڑے سے وزیر بنایا جاتا ہے تو ایل جے پی کو اس سے کوئی سروکار نہیں ہے۔