Home قومی خبریں عربی زبان کے بافیض ادیب مولانا نورعالم خلیل امینی کا زندگی نامہ’’اِک شخص دل ربا سا‘‘عنقریب منظرِعام پر،۳۰؍اپریل تک خصوصی رعایت کے ساتھ اپنی کاپی بک کروائیں

عربی زبان کے بافیض ادیب مولانا نورعالم خلیل امینی کا زندگی نامہ’’اِک شخص دل ربا سا‘‘عنقریب منظرِعام پر،۳۰؍اپریل تک خصوصی رعایت کے ساتھ اپنی کاپی بک کروائیں

by قندیل

نئی دہلی:عربی زبان کے بافیض معلم،ادیب،صحافی و مفکر مولانا نور عالم خلیل امینی کی حیات و خدمات پر پہلی مبسوط و مفصل کتاب’’اک شخص دل ربا سا‘‘عنقریب منظر عام پر آنے والی ہے۔ اس کتاب کے مصنف نوجوان قلم کار اور’’قندیل آنلائن‘‘ کے چیف ایڈیٹر نایاب حسن ہیں اور اس میں مولانا نور عالم خلیل امینی کی بیشتر؛بلکہ تمام تر علمی،فکری،ادبی،صحافتی،تعلیمی و تربیتی خدمات کا احاطہ کیا گیا ہے ، ان کے ادبی و نظری امتیازات پر روشنی ڈالی گئی ہے ،ان کے اطوار و اخلاق کی منظر کشی کی گئی ہے ،ان کی دل چسپ اداؤں اور جمال انگیز شخصیت کو انوکھے طور و طرز میں بیاں و عیاں کیا گیا ہے ۔ اس کتاب کی دوسری خوبی یہ ہے کہ اس میں مولانا کی خود نوشت یادداشتوں کو بھی مرتب کرکے شامل کتاب کیا گیا ہے، ان سے مختصراً ہی سہی،مولانا کی زندگی اور معرکہ ہاے حیات سے خود ان کی زبانی تعارف حاصل ہوتا ہے۔ کتاب کی تیسری خوبی یہ ہے کہ اس میں ۱۹۸۲ء سے لے کر مئی ۲۰۲۱ء تک کے اڑتیس انتالیس سالہ دورانیے میں مولانا نے مجلہ ’’الداعی‘‘ عربی میں جن موضوعات پر لکھا،جن اردو تحریروں اور کتابوں کے عربی ترجمے کیے،جن قومی و عالمی مسائل کے تجزیے کیے،امت اور ملت کو درپیش چیلنجز کے جن جن پہلووں کی نشان دہی کی، جن ملکی و غیر ملکی شخصیات کو بعد از مرگ اپنی تحریروں کے ذریعے زندگی و پایندگی بخشی،جن ادبی،لسانی و تنقیدی موضوعات کو انھوں نے اپنے نتائجِ تحریر و قلم رانی سے ثروت مند بنایا ،ان سب کا اشاریہ مرتب کرکے پیش کیا گیا ہے۔ یہ اشاریہ مولانا کے فکر و نظر اور علم و قلم کی وسعت،تنوع اور رنگارنگی کی منہ بولتی تصویر ہے اور آیندہ ان پر ریسرچ کرنے والوں کے لیے نہایت مفید ثابت ہوسکتا ہے۔

 

 

 

ایک اہم خوبی اس کتاب کی یہ بھی ہے کہ اس پر اردو کے ممتاز ناقد اور نہایت رسیلی نثر لکھنے والے ادیب جناب حقانی القاسمی نے تعارفی تحریر لکھی ہے، جو اس میں شامل ہے۔ حقانی صاحب مولانا کے بڑے عزیز و محبوب شاگردوں میں رہے ہیں،انھوں نے اپنی تحریر میں مولانا سے وابستہ بڑی پر لطف یادیں شیئر کی ہیں۔

کتاب ان شاء اللہ اپنے ظاہری سراپا کے اعتبار سے بھی خوش منظر ،دیدہ زیب اور اپنے موضوع یعنی مولانا نور عالم خلیل امینی ہی کی طرح نفیس و نستعلیق ہوگی۔

واضح رہے کہ نایاب حسن دارالعلوم دیوبند کے فاضل اور مولانا نور عالم خلیل امینی کے شاگرد ہیں،مولانا سے ان کا خاص تعلق رہا ہے۔ انھوں نے زبان و ادب اور ترجمہ نگاری کی تعلیم جامعہ ملیہ اسلامیہ اور مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی سے بھی حاصل کی ہے ۔ اس سے قبل ورق ورق درخشاں،دارالعلوم دیوبند کا صحافتی منظرنامہ،عکس و نقش،عہد عباسی میں ترجمہ نگاری اور مولانا اسرارالحق قاسمی:جادہ بہ جادہ ،منزل بہ منزل نامی ان کی پانچ کتابیں شائع ہوچکی ہیں،جنھیں اہل علم و ادب کے حلقوں میں خاصی پذیرائی حاصل ہوئی ہے اور یہ ان کی چھٹی کتاب ہے۔

’’اک شخص دل ربا سا‘‘ کے کل صفحات ۳۶۵؍ ہیں اور اس کی اصل قیمت چار سو روپے رکھی گئی ہے،طباعت کے بعد یہ کتاب دیوبند میں ’’ادارۂ علم و ادب‘‘ اور دیگر کتب خانوں کے علاوہ دہلی ،ممبئی لکھنؤ وغیرہ میں بھی بہ آسانی دستیاب ہوگی ،البتہ جو حضرات پیشگی آرڈر دیں گے،ان کے لیے خوش خبری یہ ہے کہ اُن تک ان شاء اللہ یہ کتاب وسطِ مئی تک پچاس فیصد کی خصوصی رعایت اور ڈاک خرچ کے ساتھ دو سو تیس روپے میں پہنچ جائے گی۔ پیشگی بکنگ کا یہ سلسلہ ۳۰؍ اپریل تک جاری رہے گا،اس کے بعد اس رعایت کے ساتھ یہ کتاب صرف بک سیلرز ،کتب فروشوں اور دس یا ان سے زائد نسخے خریدنے والوں کے لیے دستیاب ہوگی۔ کتاب دوست اور مولانا امینی کی ہمہ جہت شخصیت کے بارے میں جاننے،پڑھنے سے دلچسپی رکھنے والے 9560188574 پر واٹس ایپ کے ذریعے اپنی کاپی بک کروا سکتے ہیں،پیمنٹ اسی نمبر پر فون پے،پے ٹی ایم اور یوپی آئی آئی ڈی کے ذریعے کیا جاسکتا ہے۔

You may also like

Leave a Comment